موسمیاتی تبدیلیوں کی عالمی کانفرنس کا دوسرا مرحلہ پیرس میں جاری

موسمیاتی تبدیلیوں کی عالمی کانفرنس کا دوسرا مرحلہ پیرس میں جاری

پیرس ( فیصل بن نصیر) موسمیاتی تبدیلیوں کی عالمی کانفرنس کا دوسرا مرحلہ جاری ہے،اس مرحلے میں مجوزہ ایگریمنٹ کا ڈرافٹ نظر ثانی ،تحفظات اور تجاویز کے لئے متعلقہ ممالک کے حوالے کیا گیا ہے اور مختلف ممالک کے ماہرین اپنے حالات و واقعات کے مطابق تجاویز دیں گے جنہیں آخری مرحلے میں زیر غور لایا جائے گا، تاہم ترقی یافتہ اور غیر ترقی یافتہ ممالک کے مفادات میں ٹکراو کے باعث یہ مرحلہ سست روی کا شکار ہے،ڈیڈ لائن کے مطابق تمام ممالک کو اپنی تجاویز 3دسمبر تک جمع کروانا تھیں لیکن اب اس تاریخ میں سات دسمبر تک توسیع کر دی گئی ہے،ذرائع کے مطابق تاحال پچاس صفحات کے ڈرافٹ میں سے صرف پانچ صفحات کا جائزہ مکمل ہو سکا ہے، تاہم پاکستانی ماہرین اور وزارتِ کلائمٹ چینج کے ذمہ داران تندہی سے نظر ثانی اور تجاویز کے لئے ہونے والی میٹنگز میں حصہ لے رہے ہیں،اس حوالے سے وفاقی وزیر کلائمٹ چینج زاہد حامد کا کہنا ہے کہ ہم چاہتے ہیں کہ اگر دنیا اس حوالے سے نسبتاً کسی کمزور معاہدے کی جانب بھی جاتی ہے تو پاکستان زیادہ سے زیادہ مستفید ہو سکے،وزیر کلائمٹ چیننج کا کہنا تھا کہ پاکستان چونکہ موسمیاتی تبدیلیوں کے باعث متاثرہ ممالک کی لسٹ میں شامل ہے اس لئے دنیا پر واضع کرنا چاہتے ہیں کہ پاکستان کی مدد کرنے سے ماحول کومزید متاثر ہونے سے بچایا جا سکتا ہے،عالمی کانفرنس میں پاکستانی وفد روزانہ کی بنیاد پر وفاقی وزیر کی سربراہی میں کارکردگی رپورٹ ، جائزہ اجلاس جاری رکھے ہوئے ہے

مزید : صفحہ آخر