پنجاب کی جیلیں کسمپرسی کا شکار، 30سے زائد ترقیاتی سکیمیں برسوں بعد بھی نامکمل

پنجاب کی جیلیں کسمپرسی کا شکار، 30سے زائد ترقیاتی سکیمیں برسوں بعد بھی نامکمل

لاہور(رپورٹ۔محمد یونس باٹھ)پنجاب بھر کی 37جیلوں کی حا لت زار تبد یل کر نے کے لیے منظور کی گئی30سے زائد تر قیا تی سکیمیں کئی سا ل گزر نے کے با وجودمکمل نہیں کی جاسکیں ۔ جس کا وزیراعلی پنجا ب نے سخت نو ٹس لیتے ہوئے ہو م سیکرٹر ی سے رپوٹ طلب کر لی ہے ۔ جبکہ فنڈزمختص کیے جانے کے با وجودجیل انتظامیہ کی جا نب سے اس پر توجہ نہ د ینے کی پا دا ش میں ہو م سیکر ٹر ی نے آئی جی جیل خا نہ جا ت سمیت دیگرذ مہ دار افسرو ں کی سر زنش کر تے ہو ئے ان سے رپو ر ٹ طلب کر لی ہے۔ جیل انتظامیہ کی اس غفلت اور لاپرواہی سے فنڈ ز کے ضا ئع ہو نے کا اند یشہ ہے۔جبکہ جیلو ں میں تعداد سے کئی گنا ہ زیا دہ بند حوالا تی اور قید ی جا نو رو ں سے بھی بد تر ز ند گی گزا رنے پر مجبو ر ہیں۔با خبر زرائع سے معلو م ہوا ہے کہ ہر ما لیا تی سا ل جہا ں تما م محکمو ں کے فنڈ ز منظو ر کیے جا تے ہیں۔و ہا ں محکمہ جیل خا نہ جا ت 2015-16 کی سا لا نہ تر قیا تی سکیمو ں کے لیے بھی جو فنڈز منظو ر ہوا ہے ۔ اس کا تا حا ل استعمال میں نہ لانا جیل انتظا میہ کی کا ر کر د گی پر سوا لیہ نشان ہے۔زرائع کے مطا بق وزیر اعلی پنجا ب کی ہدایت پرپنجا ب کی تما م جیلو ں میں رواں سا ل کے دورا ن وا ٹر فلٹریشن کا کا م مکمل کیا جا نا تھا جو کہ ا د ھورا پڑا ہے اور ابھی تک مکمل نہیں ہو سکا ۔اس پر وزیر اعلی پنجا ب میا ں شہبا ز شر یف ہو م سکیر ٹر ی سمیت جیل انتظا میہ کے زمہ دار افسرو ں سے سخت نا را ض ہیں۔اسی طر ح اسی سا ل تما م جیلو ں میں تر ک منشیا ت کے لیے 6بیڈ کے یو نٹ لگا ئے جا نے تھے جو کہ انتطا میہ کی غفلت سے یہ کا م بھی مکمل نہیں ہو سکا۔ اسی طر ح پنجا ب حکو مت نے دیگر اضلا ع جہا ں جیلیں نہیں اور وہا ں جو ڈ یشل لا ک اپ ہیں ان اضلا ع میں دس ایکڑ زمین خرید کر وہا ں جو ڈ یشل لا ک اپ تعمیر کر نے کا حکم د یا گیاتھا یہ کا م بھی مکمل نہیں کیا جا سکا۔جن جیلو ں میں سزا ئے موت کے سیل کم تھے ان جیلو ں میں32کے قر یب سزائے مو ت کے سیل تعمیر کر نے کا حکم د یا گیا وہ بھی تا حا ل مکمل نہیں کیے گئے۔زیر تعمیر جیلو ں حا فظ آبا د،نا رو وال،خا نیوال،لو د ھرا ں کو فو ر ی مکمل کر نے کا حکم دیا گیا یہ تعمیر کے آخر ی مرا حل میں ہیں مگر یہ بھی اسی حا لت میں پڑ ی ہیں۔اور ان اضلا ع کے اسیرا ن دیگر ا ضلا ع میں دھکے کھا نے پر مجبور ہیں۔سنٹر ل جیل ملتان اور لاہور میں بنا ئے جا نے وا لے فیملی رومز کو فنکشنل کر نے کی ہدا یت کی گئی۔مگر ان رومز کو سپر نٹنڈ نٹ اپنے مہما نو ں کے لیے استما ل کر رہے ہیں۔جیلو ں میں سکیو رٹی وال ،پی سی او کے کا م ادھو ر ے پڑے ہیں۔جیلو ں میں دی جا نیوالی ایمبو لینس کو سپر نٹنڈ نٹ صا حبا ن کے زا تی استما ل میں لا نے کی شکایات مو صو ل ہو ئی ہیں۔اسی طر ح جیلو ں میں پا ئی جا نیو لی دیگر بہت سی خرا بیں مو جو د ہیں۔یہ بھی معلو م ہوا کہ محکمے کے لیے ملنے والے فنڈز پہلے 30جون تک استما ل میں لا نے کا حکم تھا اب اگر یہ فنڈزچھ ماہ کے اند ر 31دسمبر تک استما ل میں نہ لانے کی صورت میں انھیں ضبط کرنے کی ہدایت ہے ۔

مزید : صفحہ آخر