معذور افراد کے مسائل کے حل کیلئے انتھک جدوجہد کی جائیگی ، سکندرشیرپاؤ

معذور افراد کے مسائل کے حل کیلئے انتھک جدوجہد کی جائیگی ، سکندرشیرپاؤ

 پشاور( پاکستان نیوز)خیبر پختونخواکے سنےئر وزیر برائے سماجی بہبود وآبپاشی سکندرحیات خان شیر پاؤنے سماجی تنظیموں اور مخیر حضرات پر زور دیا ہے کہ وہ معذور افراد کی بحالی،انکے کے مسائل کے ازالے اور تعلیم و تربیت کیلئے حکومت کے ساتھ بھرپور تعاون کریں تاکہ وہ کارآمد شہری بن کر ملک و قوم کی تعمیر و ترقی میں اپنا مثبت کردار ادا کرسکیں۔وہ بدھ کے روز سپیشل ایجوکیشن کمپلکس حیات آباد پشاور میں معذوروں کے عالمی دن کی مناسبت سے منعقدہ تقریب سے بحیثیت مہمان خصوصی خطاب کررہے تھے جس سے دوسروں کے علاوہ رکن صوبائی اسمبلی و سابق معاون خصوصی برائے سماجی بہبود ڈاکٹر مہر تاج روغانی ،ڈا ئریکٹر سوشل ویلفےئر اکبر علی اور ڈاکٹر شیراز نے بھی خطاب کیا۔اس موقع پر معذور طلبہ اورانکے والدین کے علاوہ صوبائی خواتین کمیشن کی چےئرپرسن نیلم طورو اور ایڈیشنل سیکرٹری محکمہ سماجی بہبود مختیار احمد بھی موجود تھے۔سنےئر وزیر نے کہا کہ معذور افراد صلاحیتوں کے لحاظ سے معاشرے کے دیگر افرداسے کسی بھی طرح کم نہیں اور اگرانکو تعلیم و تربیت کے برابر مواقع فراہم کئے جائیں تو وہ بھی معاشرے کی ترقی میں مثبت کردار ادا کرسکتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ ہمیں احساس ہے کہ ماضی میں سماجی بہبودکا شعبہ نظر اندازرہالیکن ہم یقین دلاتے ہیں کہ اب یہ نظر انداز نہیں بلکہ ہماری اولین ترجیح کا شعبہ رہیگا۔معذورافرادکی بحالی اوردرپیش مسائل کے ازالے کیلئے انتھک جدوجہد کی جائیگی۔انہوں نے مزید کہاکہ معذورافرادکی سکیمیں صرف اے ڈی پی کی کتابوں کی زینت نہیں بلکہ عملی طور پر انکی موجودگی کو یقینی بنایا جائیگا۔انہوں نے متعلقہ حکام کو ہدایت کی کہ وہ کام کے معیار پرکوئی سودے بازی کئے بغیر مقررہ مدت کے اندر تکمیل کو یقینی بنائیں۔اس موقع پر سنےئر وزیر کو بتایا گیا کہ دنیا بھر میں 15%کے حساب سے ایک ارب افراد مختلف معذوریوں کا شکار ہیں جبکہ خیبر پختونخوامیں 1998ء کی مردم شماری کے مطابق ایک کروڑ 77لاکھ کی آبادی میں سے ایک لاکھ 77ہزار بچے معذوری کا شکار تھے جن کی شرح آبادی میں اضافے کے ساتھ اب یقینی طور پر بڑھ چکی ہو گی۔انہیں مزید بتایا گیا کہ صوبے میں معذور بچوں کیلئے پندرہ اضلاع میں مجموعی طور پر 39تعلیمی ادارے کام کررہے ہیں ان میں 3ہزار بچے زیر تعلیم ہیں۔موجودہ اداروں کی اپ گریڈیشن اور ان میں مزید توسیع وقت کا تقاضا ہے جس سے انفراسٹرکچر کی سہولیات میں دو سو فی صد جبکہ داخلوں کی شرح میں 250فی صد اضافہ ہو گا۔سنئیر وزیر نے یقین دلایا کہ معذور افراد کی بہبود اور مسائل کے حل کیلئے صوبائی حکومت تمام ممکنہ اقدامات اٹھائے گی۔قبل ازیں خصوصی بچوں نے موقع کی مناسبت سے ملی نغمے، گیت اورخاکے پیش کئے جنہیں ناظرین نے بہت سراہا ۔آخرمیں سنےئر وزیر نے خصوصی بچوں میں انعامات بھی تقسیم کئے۔

مزید : پشاورصفحہ اول