انٹرنیٹ پر لوگوں کو لوٹنے کا سب سے انوکھا طریقہ سامنے آگیا، اگر آپ کو بھی کوئی خوبصورت خاتون آن لائن یہ بات کہے تو ہوشیار ہوجائیں۔۔۔

انٹرنیٹ پر لوگوں کو لوٹنے کا سب سے انوکھا طریقہ سامنے آگیا، اگر آپ کو بھی ...
انٹرنیٹ پر لوگوں کو لوٹنے کا سب سے انوکھا طریقہ سامنے آگیا، اگر آپ کو بھی کوئی خوبصورت خاتون آن لائن یہ بات کہے تو ہوشیار ہوجائیں۔۔۔

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

نیویارک (نیوز ڈیسک) انٹرنیٹ پر نت نئے فراڈ کے طریقے سامنے آتے رہتے ہیں اور اب اسی طرح کا ایک نیا فراڈ مشہور سوشل نیٹ ورکنگ ویب سائٹ لنکڈ ان (LinkedIn) پر بھی شروع ہوگیا ہے۔ سائبر سیکیورٹی فرم سمینٹک نے خبردار کیا ہے کہ ہیکر لنکڈ ان پر جعلی پروفائل بنارہے ہیں جن پر عموماً انتہائی خوبصورت خواتین کی تصاویر لگائی جاتی ہیں اور ان کے ذریعے لنکڈ ان کے ارکان کو انوی ٹیشن بھیجے جاتے ہیں۔ جو بھی شخص ان جعلی پروفائلز کے دھوکے میں آکر ان کے ساتھ کنیکٹ ہوتا ہے وہ دراصل جعلسازوں کے نرغے میں آجاتا ہے۔

عموماً یہ پروفائل کسی خاتون ریکروٹمنٹ افسر کے نام سے بنائے جاتے ہیں اور ساتھ دلکش تصویر بھی ساتھ لگائی جاتی ہے۔ جعلی پروفائل کے زریعے عموماً پیغام دیا جاتا ہے کہ اعلیٰ تعلیم یافتہ اور قابل افراد کی ضرورت ہے، لہٰذا ملازمت کے متلاشی افراد رابطہ کریں۔ اکثر انٹرنیٹ صارفین ان کے دھوکے میں آجاتے ہیں اور بھاری نقصان اٹھاتے ہیں، لہٰذا کسی نا معلوم حسینہ کی طرف سے ملنے والے ایسے پیغام سے خبردار رہنے کی ضرورت ہے۔

مزیدجانئے؛ سعودی پرنس ولید بن طلال، بل گیٹس اور مارک زکربرگ اکٹھے ہوگئے، سب سے بڑے منصوبے کا اعلان کردیا

سائبر سیکیورٹی ماہرین کے مطابق جعلی پروفائلز کے ساتھ رابطے میں آنے والوں کی شناخت، ا ی میل، فون نمبرز اور دیگر ضروری معلومات اکٹھی کی جاتی ہیں جن کا بعدازاں کوئی بھی غلط استعمال ہوسکتا ہے، جبکہ عموماً صارفین کو دیگر ایسی ویب سائٹوں کے ساتھ بھی منسلک کردیا جاتا ہے کہ جہاں سے ان کے کمپیوٹر ز پر درجنوں طرح کے وائرس اور مضر سافٹ ویئر بھیجے جاتے ہیں۔

سمینٹک کمپنی کے تحقیق کار ڈک او برائن نے برطانوی نشریاتی ادارے بی بی سی کو بتایا کہ بدقسمتی سے لنکڈ ان کو نشانہ بنانے والے اکثر ہیکر بہت کامیاب ہیں اور ان میں سے کئی تو سینکڑوں ہزاروں لوگوں کو شکار بنارہے ہیں۔ انہوں نے صارفین کو خبردار کیا کہ دلکش خواتین کی تصاویر والے ایسے پروفائل جن میں ملازمین کی تلاش کا تاثر دیا گیا ہو، سے خبردار رہیں۔

مزید : ڈیلی بائیٹس