ہائی کورٹ نے پاکستان میڈیکل اینڈ ڈینٹل کونسل کے انتخابات روک دیئے

ہائی کورٹ نے پاکستان میڈیکل اینڈ ڈینٹل کونسل کے انتخابات روک دیئے
ہائی کورٹ نے پاکستان میڈیکل اینڈ ڈینٹل کونسل کے انتخابات روک دیئے

  

لاہور(نامہ نگار خصوصی)لاہور ہائیکورٹ نے پاکستان میڈیکل اینڈ ڈینٹل کونسل کے آج 5دسمبر کو ہونے والے انتخابات تا حکم ثانی روکتے ہوئے الیکشن بورڈ اور دیگر مدعاعلیہان کو دوبارہ نوٹس جاری کردیئے ہیں۔جسٹس ارشد محمود تبسم نے یہ عبوری حکم امتناعی پاکستان میڈیکل ایسوسی ایشن کے عہدیداروں ڈاکٹر اشرف نظامی،ڈاکٹر تنویر،فزیشن اینڈ سرجن ایسویسی ایشن کے عہدیدارڈاکٹر عبدالمنان اور ینگ ڈاکٹر ایسویسی ایشن کے سیکرٹری ڈاکٹر سلمان کاظمی سمیت متعدد درخواستوں کی لاہور ہائیکورٹ راولپنڈی بنچ میں سماعت کے بعد جاری کیا۔درخواست گزاروں کا موقف ہے کہ پنجاب کے 12اضلاع سمیت سندھ کے متعدد ضلعوں میں 5 دسمبرکوتیسرے مرحلے کے بلدیاتی انتخابات ہورہے ہیں،بلدیاتی انتخابات کی بنا پر ان اضلاع سے تعلق رکھنے والے 22ہزار ڈاکٹرز پی ایم ڈی سی کے انتخابات میں حصہ نہیں لے سکیں گے جو کہ آئین پاکستان،جمہوری اصولوں اور بنیادی حقوق کی خلاف ورزی ہے،درخواست گزاروں کی طرف سے استدعا کی گئی کہ پی ایم ڈی سی کو بلدیاتی انتخابات کے تمام مراحل مکمل ہونے کے بعد انتخابات کرانے کے احکامات صادر کیا جائے۔اس پر فاضل جج نے پاکستان میڈیکل اینڈ ڈینٹل کونسل کے 5 دسمبر کو ہونے والے انتخابات کے خلاف عبوری حکم امتناعی جاری کردیا۔عدالت نے الیکشن بورڈ اور دیگر مدعاعلیہان کو دوبارہ نوٹس جاری کرتے ہوئے 11دسمبر کو تفصیلی جواب طلب کر لیاہے جبکہ اسی نوعیت کی ایک دوسری درخواست لاہور ہائی کورٹ کے مسٹر جسٹس شمس محمود مرزا نے ناقابل پذیرائی قرار دے کر مسترد کردی تاہم ہائی کورٹ راولپنڈی بنچ سے حکم امتناعی جاری ہونے کے باعث آج 5دسمبر کو پی ایم ڈی سی کے انتخابات نہیں ہوسکیں گے۔

مزید : لاہور