نیب خیبر پختونخوا نے اب تک 681 کرپٹ افراد کو گرفتار کرکے 4613 ملین روپے قومی خزانے میں جمع کروائے :صوبائی سربراہ نیب

نیب خیبر پختونخوا نے اب تک 681 کرپٹ افراد کو گرفتار کرکے 4613 ملین روپے قومی ...
نیب خیبر پختونخوا نے اب تک 681 کرپٹ افراد کو گرفتار کرکے 4613 ملین روپے قومی خزانے میں جمع کروائے :صوبائی سربراہ نیب

  

پشاور (نیوز ڈیسک) ڈائریکٹر جنرل قومی احتساب بیورو خیبر پختونخوا شہزاد سلیم نے کہا ہے کہ قومی احتساب بیورو خیبر پختونخوا نے اب تک 681 کرپٹ افراد کو گرفتار کیا اور 4613 ملین روپے کرپٹ لوگوں سے لیکر قومی خزانے میں جمع کروائے ہیں جبکہ پیشہ وارانہ صلاحیتوں کی بدولت نیب خیبرپختونخوا نے صرف امسال 141کرپٹ افراد کو گرفتار جبکہ خوردبرد کی گئی 2457 ملین روپے قومی خزانے میں جمع کروائے گئے ہیں۔ چیک تقسیم کرنے کی تقریب کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ بدعنوانی میں ملوث افراد کو قانون کے کٹہرے میں کھڑا کرنا اور ان سے لوٹی ہوئی رقم واپس خزانے میں جمع کرنا اس بات کی عکاسی کرتا ہے کہ نیب ٹھوس ثبوت کے بعد ہی کرپٹ افراد کیخلاف قانونی چارہ جوئی عمل میں لاتی ہے۔ اس موقع پر پلی بارگین کے تحت وصول کئے گئے ساڑھے چھ کروڑ روپے بھی ایڈیشنل چیف سیکرٹری فنانس ڈیپارٹمنٹ خیبرپختونخوا رضا اللہ کے حوالے کیے۔ مصالحت پلی بارگین پر تنقید کے حوالے سے ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ پلی بارگین یا مصالحت کے تحت نہ صرف کرپٹ افراد سے پیسہ لیکر قومی خزانے میں جمع کردیا جاتا ہے بلکہ سزا کے طورپر ان کی نوکری بھی ختم کردی جاتی ہے اور وہ دس سال تک انتخابات میں امیدوار کی حیثیت سے حصہ بھی نہیں لے سکتا۔ سلیم شہزاد نے کہا کہ ہمارے لئے تمام افراد قابل عزت ہیں کسی کی پگڑی اچھالنا مقصد نہیں بلکہ بدعنوانی جیسے ناسور کیخلاف لڑنا لوگوں میں بدعنوانی کیخلاف شعور اجاگر کرنا اور بدعنوانی کا تدارک کرنا ہی نیب نصب العین ہے جس پر کسی قسم کا سمجھوتہ نہیں کیا جاسکتا۔

مزید : پشاور