رہنما کے قتل کا الزام، طالبان نے طالب علم کو سر عام پھانسی دیدی

رہنما کے قتل کا الزام، طالبان نے طالب علم کو سر عام پھانسی دیدی
رہنما کے قتل کا الزام، طالبان نے طالب علم کو سر عام پھانسی دیدی

  


کابل (ویب ڈیسک) افغانستان میں طالبان نے ایک یونیورسٹی طالب علم کو سر عام پھانسی دے دی۔ اس پر طالبان کے ایک سینئر رہنما کے قتل کا الزام تھا۔ کابل حکومت کے مطابق طالبان نے فضل الرحمان نامی اس طالب علم کو جمعے کو میدان وردک ضلع میں پھانسی دی، جو ایک قتل تھا۔

پہلی مرتبہ ایک ایسی پاکستانی فلم آگئی جس کی کہانی میں صرف وہی ہوگاجوآپ چاہیں گے ، دیکھنے کیلئے سینما جانے کی بھی ضرورت نہیں بلکہ ۔۔ ۔ تفصیلات کیلئے یہاں کلک کریں

افغان وزارت داخلہ نے اس واقعے کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ ذمہ داروں کے خلاف قانونی کارروائی کی جائے گی۔ میدان وردک صوبے کے گورنر کے ترجمان عبدالرحمٰن منگال نے غیر ملکی خبررساں ادارے کو بتایا کہ قبائلی عمائدین نے طالب علم کی رہائی کے لئے ثالثی کی کوشش کی تھی تاہم وہ ناکام رہے۔ طالب علم پر طالبان کے مقامی انٹیلی جنس سربراہ ملا میراوعظ کو قتل کرنے کا الزام تھا۔ طالبان کے ترجمان ذبیح اللہ مجاہد نے کہا ہے کہ وہ واقعے کی تحقیقات کررہے ہیں۔

مزید : بین الاقوامی