ڈیڑھ سو صنعتی یونٹس بند‘ ساڑھے7لاکھ مزدور بے روزگار ہوگئے: عمار سعید

ڈیڑھ سو صنعتی یونٹس بند‘ ساڑھے7لاکھ مزدور بے روزگار ہوگئے: عمار سعید

فیصل آباد(آن لائن)ٹیکسٹائل سیکٹر کو شدید بحران کا سامنا ’’برآمدات نہ ہونے کے برابر درآمدت آسمانوں‘‘ پر ہے ٹیکسٹائل فیکٹریوں کی تعداد چار سو ہے جن میں ڈیڑھ سو صنعتی کارخانے بند ہوچکے ہیں سات لاکھ پچاس ہزار افراد موجودہ معاشی بحران اور حکومتی عدم توجہ کی وجہ سے بے روزگار ہوچکے ہیں جن کے گھروں میں فاقہ کشی نے ڈیرہ ڈال رکھا ہے ٹیکسٹائل انڈسڑی کا حاصل گیس انتہائی مہنگی مل رہی ہے اور پیداواری لاگت کے بوجھ سے صنعتی کار اور تاجر ذہنی کو فت سے دوچار ہے، وفاقی حکومت نے پٹرولیم منصوعات کی قیمتوں میں اضافہ کرکے تاجر برادری کو ایک بار پھر پریشان کرکے رکھ دیا ہے پیداواری لاگت بڑھنے سے ٹیکسٹائل انڈسٹری اور صنعتی یونٹ بحران کا شکار ہوجائیں گا آپٹما کے وائس چیرمین عمار سعید شیخ نے کہا کہ وفاقی حکومت جان بوجھ کر عوام پاکستان اور تاجر برادری کو معاشی طورپر بے حال اور پریشان کرنے پر تلی ہوئی ہے اگر پاکستان کو پڑھی لکھی اور ایماندار قیادت میسر آجا ئے تویہ تیزی سے ترقی کرسکتا ہے۔پاکستان کے21کروڑعوام کسمپرسی کی زندگی گزارنے پر مجبور ہیں۔حکمرانوں کی ڈنگ ٹپاؤ پالیسیوں کی وجہ سے ملک وقوم کو ناقابل تلافی نقصان پہنچا ہے ہمارے سامنے کئی ممالک کی مثالیں موجودہیں جہاں محب وطن قیادت نے کرپشن کے تمام راستے بند کرکے ملک وقوم کو باوقارممالک کی صف میں لاکھڑا کیا۔ چین، ترکی، ملائیشیامیں عوام کامعیار زندگی بلند ہوچکا ہے اوران ملکوں کی معیشت بھی خاصی مضبوط ہوچکی ہے۔ پاکستان میں بھی اگر کرپشن کاخاتمہ ہوجائے تو ملک بہت جلد ترقی وخوشحالی سے ہمکنار ہوسکتا ہے۔ضرورت اس امر کی ہے کہ فی الفور کرپٹ اور نااہل افراد سے چھٹکارہ حاصل کیاجائے اور اقتدار دیانتدار، جرات مند اور بے لوث قیادت کے سپرد کیا جائے تو پاکستان کی تقدیر بدل سکتی ہے۔

#/s#

مزید : کامرس