سیاست کی زنجیر سے آزادی کھیلوں کو عروج دلواسکتی ہے

سیاست کی زنجیر سے آزادی کھیلوں کو عروج دلواسکتی ہے
 سیاست کی زنجیر سے آزادی کھیلوں کو عروج دلواسکتی ہے

  

پاکستان ہاکی فیڈریشن جب تک سیاست کی زنجیر سے آزادی حاصل نہیں کرتی اس وقت تک وہ کسی بھی طر ح کھیل کے لئے مخلص ثابت نہیں ہوسکتی اس وقت پاکستان ہاکی کی حالت زار سب کے سامنے ہے اور اس کے لئے نیک دلی سے کوششوں کی ضرورت ہے اور عہدے دار جو اس وقت اپنی کرسی بچانے کے لئے سب اچھا ہے کی بات کررہے ہیں ان کو یہ بات سمجھنے کی ضرورت ہے کہ جب تک وہ عملی طور پر پاکستان ہاکی کے لئے کام نہیں کرتے اس وقت تک وہ ماضی کا کھویا مقام حاصل نہیں کرسکتے حال ہی میں پاکستان کی ہاکی ٹیم کا دنیا کی طاقتور ٹیموں کے سامنے جو حشر ہوا ہے اس سے اگر آج بھی سبق نہ سکیھا گیا تو پھر پاکستان میں ہاکی کے کھیل کا وجود بھی خطرہ میں پڑنے کا اندیشہ ہے ۔جبکہ انٹر نیشنل کرکٹ سے ریٹائر ہونے والے پاکستان کے آف ا سپنر سعید اجمل کو اس بات کا بہت دکھ ہے کہ کرکٹ بورڈ کا کوئی بھی سرکردہ افسر ان کے کرکٹ سے الوداع کہتے وقت موجود نہ تھا جس سے شاید یہ اندازہ لگایا جا سکتا ہے کہ پاکستان کرکٹ بورڈ اپنے کھلاڑیوں کو کتنی عزت دیتا ہے۔دوسری طر ف بھارتی کپتان اور اسٹار بیٹسمین ویرات کوہلی نے ایک اور اعزاز اپنے نام کرلیا، وہ ٹیسٹ کرکٹ میں سب سے زیادہ ڈبل سنچریاں بنانے والے دنیا کے پہلے کپتان بن گئے۔جو بحیثیت کپتان دنیا کے کسی بھی کپتان کی سب سے زیادہ ڈبل سنچریاں ہیں، اس سے قبل ویسٹ انڈیز کے برائن لارا نے پانچ ڈبل سنچریاں بنائی تھیں۔ویرات کوہلی چھ ڈبل سنچریوں کے ساتھ سچن ٹنڈولکر اور وریندر سہواگ کے برابر آگئے ہیں۔ٹنڈولکر نے بھی 6ڈبل سنچریاں بنائی تھیں جبکہ وریندر سہواگ نے چار ڈبل اور تین ٹرپل سنچریاں بنائیں۔وہ یہ اعزاز پانے والے بھارت کے گیارہویں جبکہ کم ترین اننگز میں یہ اسکور کرنے والے چوتھے بیٹسمین ہیں۔جبکہپولینڈ میں جاری ورلڈ انڈر 23کشتی کے مقابلوں میں ایران کے ریسلر علی رضا کریمی کو ان کے کوچ نے روسی ریسلر کے ساتھ مقابلے میں مجبور کیا کہ وہ جان بوجھ کر میچ ہار جائیں تاکہ اگلے راونڈ میں ان کا اسرائیلی ریسلر سے مقابلہ نہ ہو۔ ایشین گیمز میں طلائی تمغہ حاصل کرنے والے علی رضا کریمی مقابلے میں تین دو کی برتری کے ساتھ جیت رہے تھے جب ان کے کوچ کو احساس ہوا کہ اگلے راونڈ میں ان کا مقابلہ اسرائیل کے ریسلر کے ساتھ ہوگا۔ اس پر علی کریمی کے کوچ نے ان کو بار بار میچ ہارنے کو بولا جس کی ویڈیو انٹرنیٹ پر وائرل ہو گئی۔ میچ کے بعد علی رضا کریمی نے اپنے انسٹا گرام پیج پر ایک ویڈیو جاری کی جس میں وہ رات کے وقت پیدل چلتے جا رہے ہیں اور پس منظر میں چلنے والے گانے کے بول کہہ رہے کہ خاموشی ہی آخری چارہ ہے۔ میچ کے بعد سوشل میڈیا پر’’ تمہیں لازمی ہارنا ہے‘‘ کے ہیش ٹیگ ٹرینڈ کرنے لگے جس میں لوگوں نے علی رضا کے ساتھ ہمدردی کا مظاہرہ کیا اور ان کے کوچ کے فیصلے پر ناراضی کا اظہار کیا اور ساتھ ساتھ کھیل کو سیاست سے منسلک کرنے کو تنقید کا نشانہ بنایا۔

دوسری جانب دوسری قومی انٹر ڈیپارٹمنٹل باسکٹ بال چیمپئن شپ آج سے شروع ہوگی جس میں سات ٹیمیں حصہ لینگی، پاکستان آرمی اپنے اعزاز کا دفاع کرے گی، سات ٹیموں کو دو گروپوں میں شامل کیا گیا ہے، ٹیموں میں پاکستان آرمی، نیوی، ائیر فورس، واپدا، ریلویز، پولیس اور پی او ایف شامل ہیں،فائنل نو دسمبر کو کھیلا جائے گا۔

مزید : کالم