پیپلز پارٹی اور مسلم لیگ ن بروقت انتخابات میں رکاوٹ: محمود الرشید

پیپلز پارٹی اور مسلم لیگ ن بروقت انتخابات میں رکاوٹ: محمود الرشید

لاہور (نمائندہ پاکستان )پنجاب اسمبلی میں قائد حزب اختلاف میاں محمودالرشید نے کہا ہے کہ پیپلز پارٹی اور مسلم لیگ ن بروقت انتخابات میں رکاوٹ ہیں۔سینیٹ میں نورا کشتی جاری ہے،دونوں جماعتیں جانتی ہیں بروقت انتخابات ہوئے تو میلہ عمران خان لوٹ لے گا،لاہور دھرنا معاہدہ ڈنگ ٹپاؤ پالیسی کے تحت ہوا اس سے پہلے بھی خرابی ہوئی خیر اب بھی نہیں ہونے والی، شہباز شریف کو گڈ گورننس کے جھوٹے دعوے پر ہی نا اہل کر دینا چاہئے،تھانہ کلچر تبدیل ہوا نہ عوام کو صاف پانی، تعلیم، صحت کی بنیادی سہولت میسر آ سکی،لاقانونیت، بچوں اور خواتین کیخلاف جرائم ہوں یا کرپشن، پنجاب سر فہرست صوبہ ہے،گڑ بڑ نہ ہوتی تو وزیراعلیٰ ایوان میں آکر 56کمپنیوں میں ہونیوالی مالی بے ضابطگیوں پر وضاحت کرتے۔ مسلم لیگ ن اور پیپلز پارٹی بروقت انتخابات میں مک مکا کر چکی ہے کیونکہ دنوں جماعتیں جانتی ہیں کہ فوری انتخابات میں ان کے ہاتھ کچھ نہیں آنے والا۔ حکمران جماعت انتخابات رکوانے میں آئینی رکاوٹیں کھڑی کر رہی ہے، حلقہ بندیوں کے بل میں دانستہ طور پر رکاوٹیں کھڑی کی جا رہی ہیں۔ مذہبی جماعتوں کے دھرنوں سے متعلق بات کرتے ہوئے انکا کہنا تھا کہ حکومت مذہبی جماعتوں میں تقسیم پیدا کرنیکی کوشش کر رہی ہے، اس سے مسئلہ حل نہیں ہوگا دھرنے کی آڑ میں پنجاب اسمبلی کا اجلاس غیر معینہ مدت کیلئے ملتوی کر دیا گیا، ہونا تو یہ چاہئے تھا کہ وزیراعلیٰ شہباز شریف ایوان میں آکر56کمپنیوں میں ہونی والی مالی بے ضابطگیوں پر اپنا موقف پیش کریں لیکن ہمیشہ کی طرح اس نہایت اہم مسئلے پر بھی وزیراعلیٰ ایوان کو کسی خاطر میں نہ لائے اور الٹا اجلاس غیر معینہ مدت تک ملتوی کر کے معاملے کو دبانے کی کوشش کی جا رہی ہے۔ بچوں اورخواتین کیخلاف جرائم سمیت صوبے میں لا اینڈ آرڈر کی بد ترین صورتحال ہے، کرپشن اور کمیشن میں صوبے کا پہلا ن نمبر ہے کسان، سرکاری ملازمین، اساتذہ ، طلبہ، نابینا افراد سمیت ہرعام شہری اپنے جائز حقوق کیلئے بھی سڑکوں پر ہے، انکے مطالبات کی منظوری کے بجائے کبھی ان پر تشدد کیا جاتا ہے تو کبھی جھوٹے وعدے کرکے ٹرخایا جاتا ہے پنجاب میں سب اچھا نہیں، یہاں شہری تعلیم، صحت اور صاف پانی سمیت بنیادی انسانی ضرورتوں سے محروم ہیں۔ پولیس کا نظام روایتی ہے، تھانہ کلچر تبدیل نہیں ہو سکا، آج بھی عام آدمی کو اپنے حق کیلئے ایف آئی آر درج کرانے میں مشکلات کا سامنا ہے ان تمام مسائل کے باوجود شہباز شریف گڈ گورننس کا دعویٰ کرتے ہیں انہیں اسی غلط بیانی پر نا اہل کر دینا چاہئے۔

مزید : صفحہ آخر