میلسی ، فروٹ فروش کی مغوی کمسن بیٹی کی لاش برآمد ، قتل کا شبہ

میلسی ، فروٹ فروش کی مغوی کمسن بیٹی کی لاش برآمد ، قتل کا شبہ

میلسی(نمائندہ پاکستان) دو روز قبل عید میلاد النبی ؐ کے روز میلسی شہر کے محلہ افغانان کے فروٹ فروش کی سات سالہ اغواء ہونے والی کمسن بیٹی کو نامعلوم درندے نے فدہ نہر کے قریب زیر تعمیر(بقیہ نمبر14صفحہ12پر )

عمارت کی بنیادوں میں دبا کر قتل کر دیا ۔ واقعہ کیخلاف شہریوں میں شدید غم و غصہ پھیل گیا ۔ تفصیل کیمطابق سرکلر روڈ محلہ افغانان کے رہائشی فروٹ فروش شیخ محمو داحمد کی سات سالہ دوسری جماعت کی طالبہ بیٹی زہراعید میلاد النبیؐ کے روز باہر سڑک پر ہونے والی سجاوٹ اور لائٹنگ دیکھنے کیلئے گھر سے نکلی جسے نامعلوم اغواء کار نے اغواء کر لیا اور بچی واپس گھر نہ پہنچی والدین نے سٹی پولیس سے رابطہ کرتے ہوئے بچی کے اغواء کا خدشہ ظاہرکرتے ہوئے رپورٹ درج کرائی تا ہم دو روز سے بچی کا کوئی سراغ نہ ملا گذشتہ روز دوپہر کے بعد ایک کمسن لڑکے نے فدہ نہر کے قریب مقامی میرج ہال کے عقب میں زیر تعمیر عمارت کی بنیادوں میں گڑھا کھود کر دبائی گئی بچی کا باہر نکلا ہاتھ دیکھا اور لوگوں کو بتایا جس پر پولیس کو اطلاع دی گئی ڈی ایس پی میلسی رانا اکمل رسول نادر ایس ایچ او تھانہ سٹی مرزا حسنین عباس موقع پر پہنچ گیا اور بچی کو باہر نکالا جسے شیخ محمود احمد وغیرہ نے پہچان لیا جائے وقوعہ کے قریب ہی بچی کی پوشیدنی شلوار اور ایک شاپر میں جوس کا خالی دبہ اور ٹافیاں ملیں جو موقع پر موجود تھی جس سے خدشہ ظاہر کیا جا رہا ہے کہ مبینہ طور پر نامعلوم درندے نے کمسن بچی کو بد اخلاقی کا نشانہ بنانے کے بعد قتل کر کے دبا ڈالا وقوعہ کیخلاف شہریوں میں غم و غصہ پھیل گیا اور اہل محلہ بچی کے ورثاء کے ہمراہ کالونی چوک میں جمع ہو گئے اور روڈ بلاک کر کے شدید احتجاج کیا اور ملزم کی فوری گرفتار ی کا مطالبہ کیا گیا ڈی ایس پی میلسی رانا اکمل رسول نادر نے کہا کہ موقع سے ملنے والے تمام شواہد محفوظ کر لیئے گئے ہیں اور قتل کے ذمہ دار جنونی درندے کو پولیس جلد ہی ٹریس کر لے گی۔

مزید : ملتان صفحہ آخر