ایکسین ریٹائرڈ انہارظفر اللہ بھٹی اور بھائیوں کیخلاف نیب انکوائری خارج

ایکسین ریٹائرڈ انہارظفر اللہ بھٹی اور بھائیوں کیخلاف نیب انکوائری خارج

ملتان(سپیشل رپورٹر)محمد ظفراللہ بھٹی ایکسیئن ریٹائرڈ محکمہ انہار اور ان کے بھائیوں محمد سیف اللہ بھٹی ایکسیئن محکمہ انہار اور محمد سلیم اللہ بھٹی ڈپٹی ڈائریکٹر واسا کیخلاف نیب نے انکوائری عدم ثبوت کی بناء پر خارج کردی ہے ۔اس ضمن میں نیب نے 22جون 2017ء کو انکوائری شروع کی تھی مسلسل 6ماہ تک ریکارڈ کی چھان بین اور موقع پر جاکر تصدیق کرنے کے بعد ریجنل بورڈ نیب ملتان نے انکوائری ڈراپ کردی ۔محمد ظفراللہ بھٹی اور ان کے بھائیوں کیخلاف نیب میں جوانکوائری پچھلے چھ ماہ سے چل رہی تھی تمام ریکارڈ کی چھان بین کے بعدپورے ریجنل بورڈ نیب نے ڈراپ لیٹر(بقیہ نمبر38صفحہ7پر )

جاری کردیا ہے ۔ان پر لگائے گئے الزامات سراسر جھوٹ پر مبنی تھے۔ان پر الزام تھا کہ انہوں نے اپنی جائیداد آمدن سے زیادہ بڑھائی ہے ۔تحقیق پر پتا چلا ہے کہ ان کے والد صاحب پاکستان بننے سے پہلے کے بڑے زمیندار تھے اور ان کی اثاثہ جات میں جدی جائیداد13مربع زرعی اراضی اور بہت قیمتی شہری جائیداد موجود تھی۔جوکہ ان تمام بھائیوں کے گورنمنٹ سروس میں آنے سے پہلے کی تھی۔واضح رہے کہ اس سے پہلے بھیھ جنرل پرویز مشرف کے دور میں نیب انکوائری کرچکا تھا۔جوکہ وہ بھی جھوٹ پر مبنی تھی اور 2003میں ڈراپ ہوچکی تھی۔اب 2002سے 2017تک دوبارہ انکوائری کی گئی وہ بھی ختم ہوچکی ہے ۔اس سللہ میں جب میاں محمد ظفراللہ بھٹی ایکسیئن ریٹائرڈمحکمہ انہار سے رابطہ کیا گیا تو انہوں نے کہا ہم نے اپنے تیس سالہ سروس کا حساب دے دیا ہے۔اوریہ جھوٹی درخواست صرف اور صرف سیاسی بنیاد پر دی گئی ہے ۔کیونکہ میرے بھتیجے اور بھائی سیاست میں حصہ لیتے ہیں اور یہ درخواست بھی سراسر سیاسی بنیادوں پر دی گئی تھی۔دونوں مرتبہ جس نے بھی درخواست دی ہے اس کے پیچھے جو بلیک میلر ہے اس کا ہمیں بخوبی معلوم ہے اور ہم ان کیخلاف قانونی کارروائی کا حق محفوظ رکھتے ہیں۔ان جھوٹی درخواستوں کیوجہ سے ہمیں غریبوں کی خدمت کرنے سے کوئی نہیں روک سکتا اور ہمارے خلاف مختلف اخبارات میں اورہمار بزرگوں کیخلاف جس طرح گندی زبان استعمال کی گئی ہے اس کا ہمیں بہت رنج اور دکھ ہے ۔انہیں ایک دن ضرور اس کا حساب دینا ہوگا۔1960میں صدر پاکستان ایوب خاں کے دور میں بائیو گرافیکل انسائیکلوپیڈیا سرکاری طور پر ایک گزٹ نوٹیفکیشن جاری کیا گیا۔جس میں ہمارے والد محترم میاں محمد عبداللہ بھٹی اور ان کے خاندان کا ذکر بڑے زمینداروں میں تفصیل سے کیا گیا ہے ۔مخالفین اپنے ان اوچھے ہتھکنڈوں سے ہمیں اتحاد اور اتفاق سے کوئی علیحدہ نہیں کرسکتا۔اور اس کیوجہ سے ہمارے خاندان میں مزید مضبوطی آئی ہے ۔میاں محمد ظفراللہ بھٹی نے اپنے خاندان کے نوجوانوں کو صبر کی تلقین کی اور اپنے انصاف کا معاملہ اللہ تعالیٰ پر چھوڑ دیا ہے۔میاں محمد ظفر اللہ بھٹی نے کہا کہ میں اب اپنا سیاسی مشن بڑے جذبے کے ساتھ جاری رکھوں گا اور عبداللہ ہاؤس ہمیشہ قائم ودائم رہیگا۔

نیب انکوائری خارج

مزید : ملتان صفحہ آخر