جے یو آئی (ف) کو دھچکا‘ مولانا فضل سبحان جے یو آئی (س) میں شامل

جے یو آئی (ف) کو دھچکا‘ مولانا فضل سبحان جے یو آئی (س) میں شامل

نوشہرہ(بیورورپورٹ)جمعیت علماء اسلام (ف) کو ایک اور بڑا دھچکہ ضلع شانگلہ کے سابق امیر اور لنڈی کوتل کے ایک بہت بڑے علمی روحانی خاندان کے چشم چراغ بھی مستعفی مولانا فضل سبحان حقانی اور مولانا محمود احمد بنوری نے اکوڑہ خٹک میں مولانا سمیع الحق اور صوبائی امیر مولانا سید محمد یوسف شاہ سے ملاقات کرکے جمعیت علماء اسلام س میں شمولیت کا اعلان کیا اس موقع پر جمعیت علماء اسلام کے سربراہ مولانا سمیع الحق نے کہا کہ مولانا فضل سبحان اور مولانا محمود احمد بنوری کی جمعیت علماء اسلام س میں شمولیت ہم سب کے لئے باعث مسرت ہے اور مجھے امید ہے کہ اعلائے کلمۃ اللہ اور دین کی سربلندی کے لئے اپنی تمام تر توانائی کو بروئے کار لا کر جمعیت علماء اسلام کو منظم کرنے میں فعال کردار ادا کریں گے ۔انہوں نے ان خیالات کا اظہار اپنے دفتر جامعہ حقانیہ میں لنڈی کوتل کے مولانا محمد محمود احمدبنوری اور مولانا فضل سبحان اوردیگر علماء سے ملاقات کرتے ہوئے کیا۔انہوں نے علماء پر زور دیا کہ وہ حالات کی نزاکت اور حساسیت کے پیش نظر جمعیت علماء اسلام کی صفوں کو منظم اورفعال کریں ،اور پاکستان میں دینی قوتوں کے خلاف اسلام دشمن طاقتوں کے عزائم کو خاک میں ملا دیں۔اس موقع پر دونوں رہنماؤں مولانا سبحان حقانی سابق امیر جمعیت علماء اسلام ف ضلع شانگلہ اور مولانا محمود احمد بنوری لنڈی کوتل نے مولانا سمیع الحق کی دینی علمی سیاسی خدمات کو بالخصوص فاٹا کے لئے کی گئی کوششوں اور جدوجہد کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے جمعیت علماء اسلام س میں شمولیت کا اعلان کیا اور اس عزم کا اظہار کیا کہ وہ مولانا سمیع الحق کی قیادت میں کسی قسم کی قربانی سے دریغ نہیں کریں گے ۔ علماء نے کہاکہ یہ جماعت بے داغ جماعت ہے ہمیشہ نفاذ شریعت کے لئے جدوجہد کی ہے۔ علماء نے کہاکہ فاٹا کے انضمام کے بارہ میں مولانا سمیع الحق کے حق میں قبائلی عوام کے دلوں کی ترجمانی کا حق ادا کردیا۔

مزید : پشاورصفحہ آخر