این او سی کے بغیر تعمیرات کے خلاف کارروائی کیوں نہیں کرتے؟ ہائی کورٹ کا محکمہ ماحولیات پر اظہار ناراضی

این او سی کے بغیر تعمیرات کے خلاف کارروائی کیوں نہیں کرتے؟ ہائی کورٹ کا محکمہ ...
این او سی کے بغیر تعمیرات کے خلاف کارروائی کیوں نہیں کرتے؟ ہائی کورٹ کا محکمہ ماحولیات پر اظہار ناراضی

  

لاہور(نامہ نگار خصوصی )لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس ساجد محمود سیٹھی نے این او سی حاصل کئے بغیرپرانی انارکلی کے علاقہ میں سی آئی اے سنٹر کی تعمیرکے خلاف محکمہ ماحولیات کی جانب سے کاروائی نہ کرنے پر ریمارکس دیئے کہ عدالت کو شہریوں کے تحفظات کا علم ہے، محکمہ ماحولیات کی اجازت کے بغیر تعمیر شروع کردی گئی اور کسی نے کارروائی کرنا تک گوارا نہ کیا۔

درخواست گزاروں کے وکیل تفضل رضوی نے موقف اختیار کیا کہ لاہور کے ربانی روڈ پر سی آئی اے سنٹر کو غیر قانونی طور پرتعمیر کیا جا رہا ہے،سی آئی اے سنٹر کی تعمیر سے مقامی رہائشیوں کی زندگیاں خطرے میں ہیں محکمہ ماحولیات کی جانب سے عدالت کو آگاہ کیا گیا کہ ہمارے پاس این او سی کے لئے اب درخواست موصول ہوئی ہے ،عدالت کا محکمہ ماحولیات کے این او سی کے بغیر تعمیر کرنے پر برہمی کا اظہار کیا،عدالت نے استفسار کیا کہ بغیر اجازت تعمیر کرنے پر کارروائی کیوں نہیں کی گئی ؟عدالت نے ریمارکس دیئے کہ عدالت کو شہریوں کے تحفظات کا علم ہے،محکمہ ماحولیات کی اجازت کے بغیر تعمیر شروع کردی گئی اور کسی نے کارروائی کرنا  تک گوارا کیوں نہ کیا، عدالت نے سماعت 6دسمبر تک ملتوی کرتے ہوئے محکمہ ماحولیات کے ذمہ دار افسر کو رپورٹ سمیت طلب کرلیاہے۔

ڈیلی پاکستان کے یو ٹیوب چینل کو سبسکرائب کرنے کیلئے یہاں پر کلک کریں

مزید : لاہور