نشتر ہسپتال :کرپشن کیس ،تحقیقات کا پہلا ’’ٹیکہ ‘‘ ڈرپس خریداری میں گھپلے بے نقاب

نشتر ہسپتال :کرپشن کیس ،تحقیقات کا پہلا ’’ٹیکہ ‘‘ ڈرپس خریداری میں گھپلے ...

ملتان ( وقائع نگار ) انٹی کرپشن میں نشتر ہسپتال کرپشن کیس کی تحقیقات کا سلسلہ تیز کردیا ہے۔ جس میں آئی وی ڈرپس کی خریداری میں خورد برد کا انکشاف ہوا ہے۔انٹی کرپشن کے مطابق آئی وی ڈرپس کی خریداری میں ڈوپلیکیٹ ڈیمانڈ لیٹر لگایا گیا ہے۔ حالانکہ نشتر ہسپتال کی سالانہ اوریجنل (بقیہ نمبر45صفحہ7پر )

ڈیمانڈ دو لاکھ ڈرپس ہیں، اس کے باوجود خریداری کرتے وقت اس ڈیمانڈ کو بڑھا کر 5 لاکھ 68 ہزار 150 ڈرپس کی گئیں۔بعد میں ڈوپلیکیٹ ڈیمانڈ لیٹر کے ذریعے اس ڈیمانڈ کو دس لاکھ تک پہنچا دیا گیا، انٹی کرپشن ذرائع کامزید کہنا ہے۔ آئی وی ڈرپس کی خریداری میں پیپرا رولز کی کھلی خلاف ورزی کی گئی ہے۔کرپشن میں نشتر ہسپتال کے ایم ایس ڈاکٹر عاشق ملک، ڈاکٹر صدیق ثاقب اور فارمسسٹ آمنہ عارف ملوث ہیں۔واضح رہے انٹی کرپشن ایم ایس ڈاکٹر عاشق ملک سمیت دیگر کے خلاف مقدمہ درج کر چکا ہے۔

مزید : ملتان صفحہ آخر