قطری شہزادے کو بلوچستان میں تلور کے شکار کی اجازت مل گئی

قطری شہزادے کو بلوچستان میں تلور کے شکار کی اجازت مل گئی

کوئٹہ(صباح نیوز)بلوچستان حکومت کی جانب سے جہاں ایک طرف جنگلات کے تحفظ کے لیے قانون پر عملدرآمد یقینی بنانے کے لیے گائیڈلائنز کی منظوری دی وہیں انتظامیہ نے قطری شہزادے کو خصوصی اجازت دے دی کہ وہ صوبے بھر میں نایاب پرندے تلور کا شکار کرسکتے ہیں۔ تفصیلات کے مطابق (بقیہ نمبر47صفحہ7پر )

وسطی ایشیائی خطے میں رہنے والے تلور ہر سال سردیوں میں اپنے آبائی علاقوں میں سخت موسم سے بچنے کے لیے پاکستان آجاتے ہیں اور موسم سرما کے بعد وہ اپنے خطے میں واپس چلے جاتے ہیں۔ قطری شہزادے نے ہجرت کرکے آنے والے پرندے تلور کا شکار کرنے کی اجازت کے لیے 1 لاکھ ڈالر کی ادائیگی کی۔شکار کرنے والے افراد کے لیے 10 روز میں زیادہ سے زیادہ 100 پرندوں کے شکار کی حد مقرر ہے لیکن وہ اکثر اس سے تجاوز کرجاتے ہیں۔پالیسی کے مطابق وہ لوگ شوٹ گنز اور دیگر ہتھیار کا استعمال نہیں کرسکتے لیکن وہ غلیل کی مدد سے تلور کا شکار کرسکتے ہیں۔علاوہ ازیں محکمہ جنگلات کے عہدیدار نے اس بات کی تصدیق کی کہ قطری شہزادے نے بلوچستان میں تلور کا شکار کرنے کے لیے صوبائی حکومت کو 1 لاکھ ڈالر ادا کیے۔

قطری شہزادے

مزید : ملتان صفحہ آخر