سرکاری سکول بھانے میں تبدیل خواتین ٹیچرز غائب گھر بیٹھے تنخواہیں بٹورنے کا انکشاف

سرکاری سکول بھانے میں تبدیل خواتین ٹیچرز غائب گھر بیٹھے تنخواہیں بٹورنے کا ...

ڈیرہ ‘ کوٹ ادو( نمائندہ خصوصی ‘ تحصیل رپورٹر ) میونسپل کمیٹی کوٹ ادو کی غفلت لا پرواہی وعدم توجہی کے باعث گورنمنٹ ہائی سکول کی عمارت کے مغربی حصہ کے ساتھ ریلوے لائن فلتھ ڈپو میں تبدیل ہو گئیہے، میونسپل کمیٹی کے خاکروب شہر بھر کا کوڑا کر کٹ اس سکول کی عمارت کے ساتھ بائی پاس سڑک کنارے ریلوے لائن پھینک دیتے ہیں جس سے تعفن پھیل رہاہے جبکہ اکثر اوقات اس گندگی کو آگ لگادی جاتی ہے جسکی وجہ سے کلاس رومز میں دھواں اور بدبو(بقیہ نمبر52صفحہ7پر )

جاتی ہے جس سے کلاس رومز میں طالبات اور ٹیچر کا بیٹھنا محال ہوجاتاہے،اس حوالے سے ٹیچرز کا کہنا ہے کہ کئی بار میونسپل کمیٹی کی انتظامیہ کو درخواستیں بھی دیں،مگر کوئی نوٹس نہیں لیا گیا،انہوں نے کہا کہ سکول کے ساتھ پڑے کوڑا کرکٹ کو آگ لگا دی جاتی ہے جس سے طالبات کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے ،ریلوے لائن کے قریب رہائشی لوگوں کا کہنا ہے کہ میونسپل کمیٹی کے ملازموں کو منع کرنے کے باوجود بھی وہ شہر کا کوڑا کرکٹ ادھر پھینک جاتے ہیں جسکی وجہ سے طلباء سمیت مکین بھی بیماری کا شکار ہو رہے ہیں،بچوں کے والدین نے اعلی حکام سے مطالبہ کیا ہے کہ ان گندگی کے ڈھیروں کو یہاں سے اٹھوا کر ان پر مٹی ڈلوائی جائے تاکہ طلباء آرام سے یہاں سے گزر کر سکول جا سکیں اور تعلیم حاصل کر سکیں۔ دریں اثناء ڈیرہ غازی خان کے موضع کوٹلہ شفیع محمد کی بستی بھٹی میں مقامی زمیندار خمیسہ بھٹی نے پرائمری سکول کی عمارت پر قبضہ کرکے سکول میں اپنے پالتو جانور باندھ دئیے۔اب سکول میں بچیوں کی بجائے جانور نظر آتے ہیں۔استانیاں گھر بیٹھے تنخواہیں لے رہی ہیں جبکہ محکمہ تعلیم کے ارباب اختیار اس مسئلے سے غافل نظر آتے ہیں یا پھر دانستہ خاموش ہیں۔اس حوالے سے سی ای او ایجوکیشن عبدالغفار لنگاہ سے متعدد بار موقف لینے کی کوشش کی گئی لیکن وہ دفتر میں دستیاب نہ تھے۔. ایک طرف متعدد ایسے سکولز ہیں جہاں عمارات نہیں ہیں اور معصوم بچے موسم کی صعوبتوں کا سامنا کرتے ہوئے حصول تعلیم کی لگن میں مصروف نظر آتے ہیں تو دوسری طرف محکمہ تعلیم کروڑوں روپے سے تعمیرات کے بعد زمینداروں کے اثرورسوخ کے سامنے تصویر بے بسی بنا اپنی عمارات واگذار نہِیں کراسکتا۔

ٹیچرز غائب

مزید : ملتان صفحہ آخر