مختلف حادثات میں بچے سمیت 5افراد جاں بحق ،نامعلوم شخص کی لاش برآمد

مختلف حادثات میں بچے سمیت 5افراد جاں بحق ،نامعلوم شخص کی لاش برآمد

ملتان ‘ بستی ملوک ‘ کچا کھوہ ‘ مظفر گڑھ ‘ وہوا ( وقائع نگار ‘ نمائندگان ) حادثات میں بچے سمیت 3 افراد جاں بحق ملتان سے وقائع نگار کے مطابق ملتان میں مختلف واقعات میں دو افراد جاں بحق ہوگئے ہیں۔تفصیل کے مطابق سٹی ریلوے اسٹیشن کے قریب سے ٹرین کی زد میں آ کر نوجوان جاں بحق ہوگیا ہے۔اطلاع ملتے ہی پولیس اور ریسکیو ٹیمیں موقع پر پہنچیں۔ریسکیو نے لاش کو نشتر ہسپتال کے سرد خانے منتقل کر دی۔جبکہ مقامی پولیس نے قانونی کاروائی کا آغاز(بقیہ نمبر20صفحہ12پر )

کردیا ہے۔جبکہ دوسرے واقعہ میں باغ لانگے خان سے نامعلوم شخص کی لاش برآمد ہوئی۔ جس کو ریسکیو اور پولیس نے موقع پر پہنچ کر قبضے میں لیا۔پولیس کے مطابق ظاہری طور پر مرنے والا نشے کا عادی لگتا ہے،لاش کو برائے شناخت نشتر ہسپتال کے سرد خانے منتقل کر دیا گیا ہے۔بستی ملوک سے نمائندہ پاکستان کے مطابق تھانہ بستی ملوک کے علاقہ چک 5فیض پر بارات لے کر جانے والی کار اور لکڑیوں سے لدے ٹرک میں تصادم جس کے نتیجے میں 5سالہ بچہ محمد عبداللہ ولدعبدالحمید موقع پر جانبحق مزید زخمی افراد کو موٹروے پولیس اور ریسکیو 1122کی ٹیم نے نکال کر طبعی امداد فراہم کیا اور زیادہ زخمیوں کو نشتر ہسپتال ملتان منتقل کیا ۔کچا کھوہ سے نمائندہ پاکستان کے مطابق شیخوپورہ سے صادق آباد جانیوالی بس کچاکھوہ پل بیرون کے قریب حادثہ کا شکار۔ایک شخص جاں بحق ،25افراد زخمی تفصیل کے مطابق شیخوپورہ سے بس نمبر LES3295مسافر لیکرصادق آباد کی طرف جارہی تھی کہ کچاکھوہ پل بیرون پر ڈرائیور کو مبینہ طور پر نیند کی اونگھ آگئی بس تیز رفتار ہونے کی وجہ سے بے قابو ہوکر کھائی میں جاگری جس کی وجہ سے فرحان سکنہ نوشہرہ فیروز سندھ دوران طبی امداد جاں بحق جبکہ 25 مسافر جن می خواتین ،بچے اور بزرگ بھی شامل تھے زخمی ہوگئے اطلاع پاکر ریسکیو 1122اور پیٹرولنگ پولیس ،پنجاب پولیس اور اہل علاقہ موقع پرپہنچ گئے جنہوں نے امدادی کاروئیوں کے بعد زخمیوں کو بس سے نکالا اور ریسکیو 1122نے موقع 6افراد کو ابتدائی طبی امداد کے بعد فارغ کردیا اور شدید زخمیوں کو ڈی ایچ کیو ہسپتال خانیوال ریفرکردیا گیا مرنے والے شخص کو رورل ہیلتھ سنٹر کچاکھوہ میں لایاگیا جہاں پر پولیس تھانہ کچاکھوہ نے ضروری کاروائی کے بعد لاش ورثاء4 کے حوالے کردی جبکہ بس ڈرائیور اور دیگر عملہ موقع سے فرار ہوگئے ۔ مظفر گڑھ سے نامہ نگار کے مطابق سرکاری سکول کے بچوں کے لئے استعمال ہونیوالی دھکا سٹارٹ بس نے موٹر سائیکل رکشہ سوار کو کچل دیا.ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال کے قریب سرکاری سکول کی بس کی زد میں آنے سے ایک شخص جاں بحق دوسرا شدید زخمی ہوگیا.زخمی ہونے والے شخص کو موقع پر ہی ابتدائی طبی امداد دیکر انتہائی تشویش ناک حالت میں ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال منتقل کردیا گیا. جاں بحق ہونے والا عبدالستار ولد عبد المجید عمر 23 سال کچی بستی نزد روہیلا والی کا رہائشی تھا.سرکاری سوشل ویلفئیر سکول کے طالبعلموں کے لیے استعمال ہونیوالی خستہ حال بسوں کا فٹنس سرٹیفیکٹ اور ٹرانسپورٹ اتھارٹی سے پاسنگ بھی نہ ہونے کا انکشاف ہوا ہے. حادثات کا سبب بننے والی سرکاری سکول کی بسوں کے باعث جہاں شہریوں کی زندگی محفوظ نہیں وہیں سفر کرنیوالے طالبعلموں کی زندگیاں بھی داؤ پر لگ گئی ہیں.وہوا سے نمائندہ پاکستان کے مطابق نماز کی تکبیر کہتے ہوئے 70 سالہ بزرگ دل کا دورہ پڑنے سے خالق حقیقی کو جاملا، تفصیل کے مطابق وہوا کا رہائشی ستر سالہ عبدالحمید کھتران نماز عصر کی ادائیگی کے لیے جامع مسجد فاروق کھتران آیا ہوا تھا اور باجماعت نماز کی ادائیگی کے لیے عبدالحمید کھتران نے تکبیر کہنا شروع کی اور جونہی انہوں نے ’’حی علی الفلاح‘‘ کے الفاظ ادا کیے انہیں دل کا شدید دورہ پڑا اور وہ نیچے گر پڑے دیگر نمازیوں نے انہیں اٹھایا مگر وہ اپنے خالق حقیقی کو جاملے تھے مرحوم وہوا کے معروف زمیندار سردار محمد ایوب خان کھتران کے بھائی تھے۔

مزید : ملتان صفحہ آخر