آل پاکستان واپڈا ورکرز یونین زیراہتمام "یوم تشکر "منایا گیا

آل پاکستان واپڈا ورکرز یونین زیراہتمام "یوم تشکر "منایا گیا

لاہور(پ ر)محکمہ بجلی کے ایک لاکھ چالیس ہزار کارکنوں نے اپنے مطالبات منظور ہونے پر آل پاکستان واپڈا ہائیڈروالیکٹرک ورکرز یونین سی بی اے کے زیراہتمام "یوم تشکر "منایا جبکہ صنعتی تعلقات ایکٹ 2012 ؁ کے تحت یونین ہذا کے ڈیمانڈنوٹس پر مختلف کیڈروں کے اْن کی طویل سروس اور کام کی خصوصی نوعیت کے پیش نظر اْن کے پے سکیلوں میں دو گریڈ اضافہ، اسسٹنٹ لائن مینوں اور گرڈ عملہ کو جاب کریو الاؤنس، ایم اینڈٹی، پی اینڈ آئی کے لئے خصوصی الاؤنس میں اضافہ کردیا گیا ہے۔

ملازمین کی بچیوں کی شادی گرانٹ کے لئے خصوصی الاؤنس منظور کردیئے ہیں جو ملازم فرائض کی سرانجام دہی میں شہید ہونے والوں کے لواحقین کی مدد کے لئے 35 لاکھ روپے خصوصی امداد جبکہ سو فیصدمعذور ہونے والوں کو بھی یہی سہولت حاصل ہوگی ۔

اْن کے بچوں کی مفت تعلیم اور معذور ملازمین کے مکمل علاج کے لئے ہر ممکن بہترین سہولت کی منظوری دی گئی ہے اس موقعہ پر بختیار لیبرہال نسبت روڈ لاہور پر آل پاکستان واپڈا ہائیڈروالیکٹرک ورکرز یونین سی بی اے کے ہزاروں کارکنوں کی زبردست ریلی منعقد ہوئی جسے بزرگ مزدور راہنماء خورشیداحمد جنرل سیکرٹری نے کارکنوں کو خطاب کرتے ہوئے کہا کہ بجلی کے کارکن کام پر عوام کی خدمت عبادت کی طرح سرانجام دیتے رہیں اْنہوں نے قومی ادارہ کی بہتر کارکردگی کے لئے بجلی کی چوری روکنے اور واجبات کی وصولی کی ذمہ داریوں کو احسن طور پر سرانجام دینے کے لئے تاکید کی اْنہوں نے اعلان کیا کہ کارکنوں کی جدوجہد سے محکمہ بجلی میں سٹاف کی کمی کو دور کرنے کے لئے وفاقی حکومت نے بھرتی کرنے کے احکامات کا اجراء کردیا ہے جس میں مستحق ملازمین کے بچوں کی بھرتی کے مخصوص کوٹہ پر بھی عمل ہوگا۔ اْنہوں نے کہا کہ محکمہ بجلی انتظامیہ ملازمین کے بچوں کی تعلیم کو فروغ دینے کے لئے خصوصی الاؤنس و مدد کا انتظام کرے اور ملازمین کو حادثات سے محفوظ کرانے کے لئے معیاری حفاظتی سامان اور پیشہ وارانہ ٹریننگ کے انتظامات واضح کررہی ہے اس موقعہ پر حاجی محمد یونس ، رانا عبد الشکور ، مظفر متین ، اْسامہ طارق، ڈاکٹر افتخار،شیخ شعیب، چوہدری محمد اکرم گجر ، رانا محمد اکرم ،حاجی لطیف، نوید ڈوگر، نوید ڈوگر ،لیاقت گجر ، رانا محمدشاہد نے بھی خطاب کیا اجلاس میں ایک قرار داد کے ذریعے وزیراعظم پاکستان سے پْرزور مطالبہ کیا گیا کہ وہ ملک میں ضروریات زندگی کی اشیاء میں بے پناہ مہنگائی کنٹرول کرنے کے لئے ضروریات زندگی کی عام اشیاء کی قیمتیں کم کرکے ان کی قیمت کو منجمد کریں اور ملک میں جاگیرداروں و سرمایہ داروں سے ٹیکس وصول کریں ان کی بیرون ملک جمع شدہ بھاری رقوم لاکر قومی صنعتی اور زرعی ترقی کے لئے بروئے کار لائیں اور اپنے وزراء ، اسمبلی اور سینٹ کے ارکان کو ہدایت کریں کہ وہ بانی پاکستان قائداعظم محمد علی جناح کے نقش قدم پر چل کر ایک روپیہ تنخواہ لیکر عملی مثال بنیں اور ملک میں سادگی کو بروئے کار لاکر جلدازجلد قومی" اقتصادی خودکفالت "کے مقاصد کی تکمیل کریں۔

مزید : میٹروپولیٹن 4