نئی اشتہاری پالیسی پر حتمی فیصلہ سٹیک ہولڈرز کیساتھ مل کر کیا جائیگا : افتخار درانی

نئی اشتہاری پالیسی پر حتمی فیصلہ سٹیک ہولڈرز کیساتھ مل کر کیا جائیگا : افتخار ...

اسلام آباد(سٹاف رپورٹر) وزیر اعظم کے معاون خصوصی برائے اطلاعات افتخار درانی نے کہا ہے کہ وزیر اعظم عمران خان میڈیا کو ترقی دینا چاہتے ہیں ، اس حوالے سے ہونے والا تمام منفی پراپیگنڈا غلط ہے۔وزیر اعظم نے آج تک کسی میڈیا ہاؤس کے اشتہارات کے حوالے سے کوئی ہدایت جاری نہیں کی ، انہوں نے صرف اور صرف میرٹ اور شفافیت پر زور دیا ہے۔افتخار درانی نے کہاکہ وزیر اعظم کئی بار اس امر کا اظہار کر چکے ہیں کہ ان کے وزیر اعظم بننے میں میڈیا کا بہت کردار ہے اور وہ پاکستان میں ایک آزاد ، خود مختار اور ترقی کرنے والا میڈیا دیکھنا چاہتے ہیں۔ان خیالات کا اظہار وزیر اعظم کے معاون خصوصی نے اے پی این ایس کی خصوصی دعوت پر اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا ، اس موقع پر اے پی این ایس کے صدر حمید ہارون ، سیکرٹری جنرل سرمد علی اور تحریک انصاف کی میڈیا ایڈوائزر انیلہ خواجہ بھی موجود تھیں۔افتخار درانی نے کہا کہ وزیر اعظم کی طرف سے نیوز پرنٹ پر ڈیوٹی ختم کرنے کا جو اعلان کیا گیا ہے اس پر ایک آدھ دن میں عملدرآمد شروع ہو جائے گا جبکہ 31دسمبر 2018ء تک پرنٹ میڈیا کے 50کروڑ کے واجبات بھی ادا کر دیئے جائیں گے۔انہوں نے جہاں تک حکومت کی جاری کردہ نئی اشتہاری پالیسی کا تعلق ہے تو وہ ابھی ایک صرف مسودہ ہے جس پر حتمی فیصلہ اے پی این ایس سمیت تمام سٹیک ہولڈر زسے مل کر کیا جائے گا۔وزیر اعظم کے معاون خصوصی نے کہا کہ تحریک انصاف کی حکومت رائٹ ٹو انفارمیشن پر یقین رکھتی ہے اور اس کی گورننس کی بنیاد رحم ، انصاف اور احساس کی پالیسی پر ہے ، پی ٹی آئی پہلی بار حکومت میں آئی ہے اور ابھی ہم حکومتی معاملات کو سمجھنے کی کوششوں میں مصروف ہیں ،چالیس سال سے سیاست زدہ بیورو کریسی سے نبردآزما ہونے کی جدوجہد کر رہے ہیں۔افتخار درانی نے کہا کہ یہ بات بالکل واضح ہے کہ حکومت نے میڈیا کو ساتھ لے کر چلنا ہے ،وزیر اعظم عمران خان نہ کسی انتقامی پالیسی پر یقین رکھتے ہیں نہ ہی میڈیا کو کنٹرول کرنے کی کوئی پالیسی ترتیب دی گئی ہے۔پاکستان میں ہر شعبے نے آگے بڑھنا ہے اور میڈیا بھی انشاء4 اللہ پی ٹی آئی کے دور میں خوب ترقی کرے گا۔

افتخار درانی

مزید : صفحہ اول