قبا ئلی علا قو ں میں عدالتوں کے قیام کا معاملہ کے پی حکومت کی سپریم کورٹ میں اپیل

قبا ئلی علا قو ں میں عدالتوں کے قیام کا معاملہ کے پی حکومت کی سپریم کورٹ میں ...

پشاور(آ ئی این پی) قبائلی علاقوں میں 30 روز میں عدالتیں بنانے کا فیصلہ چیلنج کرتے ہوئے خیبرپختون خوا (کے پی)حکومت نے سپریم کورٹ سے رجوع کرلیا ہے،پشاور ہائی کورٹ کی جانب سے قبائلی علاقوں میں 30 دن میں عدالتیں بنانے کا فیصلہ دیا گیا تھا تاہم کے پی حکومت نے اسے عدالت عظمی میں چیلنج کردیا ہے۔ نجی ٹی وی کے مطا بق پیر کو ایڈووکیٹ جنرل خیبرپختونخوا کا کہنا تھا کہ رٹ سپریم کورٹ میں جمع کرادی کوشش ہے جلد اس کی ساعت ہوسکے۔اپیل میں حکومت نے موقف اختیار کیا ہے کہ قبائلی علاقوں تک قوانین کا دائرہ کار پھیلا دیا گیا ہے تاہم عدالتیں بنانے کے لیے وقت درکار ہے۔اپیل میں کہا گیا ہے کہ ابھی قبائلی اضلاع میں پولیس سسٹم اور انفراسٹرکچر کی تکمیل کرنی ہے اسی لیے عدالتوں کے قیام کے لیے وقت درکار ہوگا۔کے پی حکومت نے اپیل میں استدعا کی ہے کہ عدالت عظمی ہائی کورٹ کا فیصلہ معطل کرکے صوبائی حکومت کو مخصوص وقت کی مہلت دے۔واضح رہے پشاور ہائی کورٹ کی جانب سے فاٹا کے کے پی میں انضمام کے بعد قبائلی علاقوں میں 30 روز کے اندر عدالتیں بنانے کا حکم دیا تھا۔

اپیل

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر