موٹرسائیکل سواروں کے بعد گاڑی مالکان کی شامت آگئی ، حکم دیدیا گیا

موٹرسائیکل سواروں کے بعد گاڑی مالکان کی شامت آگئی ، حکم دیدیا گیا
موٹرسائیکل سواروں کے بعد گاڑی مالکان کی شامت آگئی ، حکم دیدیا گیا

  

کراچی (ویب ڈیسک) وزیر اعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے کھلے خط (اوپن لیٹر) پر چلنے والی گاڑیوں کے خلاف کریک ڈاؤن کی ہدایت کردی۔

شہر قائد میں وزیر اعلیٰ کی زیر صدارت امن و امان سے متعلق اجلاس ہوا، جس میں صوبائی وزیر ناصر حسین شاہ، مشیر وزیر اعلیٰ مرتضیٰ وہاب، انسپکٹر جنرل(آئی جی) پولیس سید کلیم امام، ایڈیشنل آئی جی  سپیشل برانچ ڈاکٹر ولی اللہ دل، کشمنر کراچی اور دیگر حکام نے شرکت کی۔اجلاس کے دوران کراچی کے علاقے ڈیفنس فیز 5 میں ہونے والے دھماکے سے متعلق بریفنگ دی اور بتایا کہ جو مہران کار دھماکے میں استعمال ہوئی وہ چوری کی تھی۔

ڈان نیوز کے مطابق امن و امان سے متعلق وزیر اعلیٰ کو بتایا گیا کہ 2013 میں ٹارگٹ کلنگ کے 575 واقعات ہوئے جبکہ رواں سال 6 واقعات ہوئے، جس میں پولیس اہلکاروں کو ضلع وسطی میں شہید کیا گیا۔وزیر اعلیٰ نے واقعات بڑھنے کی وجہ معلوم کی تو انہیں بتایا گیا کہ امن و امان کی صورتحال بہتر ہونے کے بعد لوگ موبائل فون چھینے کی شکایات کرتےہیں جبکہ پہلے نہیں کرتے تھے۔

اجلاس کے دوران انہیں بتایا گیا کہ موٹرسائیکل چھینے کے واقعات میں کمی آئی اور 2013 میں 5 ہزار 118 واقعات ریکارڈ کیے گئے تھے جو کم ہو کر رواں سال 1892 ہوگئے۔اسی طرح گاڑیوں کی چھیننے کے واقعات 2013 میں980 تھی جو رواں سال 165 تھے۔اس موقع پر وزیر اعلیٰ کی جانب سے کہا گیا کہ اس صورتحال کو کنٹرول کریں، ہم موٹرسائیکل میں بھی ٹریکرز لگوانا چاہ رہے ہیں لیکن یہ ہو نہیں رہا اور  آئی جی سندھ کو ہدایت کی کہ موٹرسائیکل میں ٹریکنگ لگوانے کے فیصلے پر عمل درآمد کرائیں۔

وزیر اعلیٰ سندھ نے ہدایت کی کہ کھلے خط پر چلنے والی گاڑیوں کے خلاف کریک ڈاؤن کیا جائے اور ایکسائز ڈپارٹمنٹ منصوبہ بنا کر اس پر عمل کرے۔

مزید : علاقائی /سندھ /کراچی