قانون کو عام کرنے کیلئے عالمی معیار کی لاء یونیورسٹیاں بنائی جائیں،اسد شمیم

    قانون کو عام کرنے کیلئے عالمی معیار کی لاء یونیورسٹیاں بنائی جائیں،اسد ...

  



لاہور(پ ر) ”انصاف فار یو‘‘ نامی ادارے کے بانی اور پاکستانی نژادبرطانوی بزنس مین فرنیچر اِن فیشن کے چیف ایگزیکٹیو اسد شمیم نے وزیر اعظم عمران خان سے مطالبہ کیا ہے کہ عوام کو آئین و قانون سے آگاہ کر نے کیلئے پاکستان میں بین الاقوامی معیار کی لاء یونیورسٹیاں بنائی جائیں کیونکہ جب عوام آئین و قانون سے آگاہ ہوں گے تو جرائم کی شرح بھی کم رہے گی اورجرائم پیشہ افراد کویہ خوف بھی رہے گا کہ وہ قانون کی گرفت میں آسکتے ہیں اور انہیں کتنی سزا بھگتنا پڑے گی۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان میں قانون کی مزید جامعات بننے سے جہاں لوگ قانون کو سمجھیں گے وہیں زیادہ وکیل بھی بنیں گے اور زیر التوا کیسوں پر کام کرسکیں گے۔ ”انصاف فار یو‘‘ نامی ادارے کے بانی اسد شمیم نے کہا کہ پاکستان کی عدالتوں میں اٹھارہ لاکھ سے زائد مقدمات زیر التوا ہیں اور ججوں کی ایک ہزارکے قریب آسامیاں خالی ہیں لہٰذا حکومت کو چاہیے کہ وہ ہنگامی بنیادوں پر ججز اور عدالتی عملے کی آسامیاں پُر کرے تاکہ زیر التوامقدمات کا فیصلہ ممکن ہوسکے۔انہوں نے کہا کہ سپریم کورٹ کی ریویو پالیسی بھی تبدیل ہونی چاہیے اور نظر ثانی کیلئے ایک الگ بنچ تشکیل دیا جانا چاہیے کیونکہ جس بنچ نے فیصلہ دیا ہوگا وہ ریویو میں اپنے فیصلے کے خلاف نہیں جائے گا۔

مزید : میٹروپولیٹن 1