انتہا پسندی کے خاتمہ کیلئے سوشل میڈیا کا کردار انتہائی اہم، ڈاکٹرالدرویش

    انتہا پسندی کے خاتمہ کیلئے سوشل میڈیا کا کردار انتہائی اہم، ڈاکٹرالدرویش

  



اسلام آباد(آئی این پی) انٹرنیشنل اسلامک یونیورسٹی اسلام آباد کے صدر پروفیسرڈاکٹر احمد یوسف احمد الدرویش نے کہا ہے کہ پاکستانی معاشرے کو جنونی انتہاپسندی اور جملہ تعصبات سے نجات دلانے کیلئے سوشل میڈیا کا کردار بڑی اہمیت کا حامل ہے، سوشل میڈیا کے مثبت استعمال کی حوصلہ افزائی کرتے ہوئے پاکستان کا ماحول خراب کرنیوالے جنونی عناصر کی حوصلہ شکنی کرنا ہوگی جس کیلئے ضروری ہے کہ پاکستان کے تعلیم یافتہ نوجوان سوشل میڈیا پر اپنے پاک وطن کے اداروں کیخلاف ہونیوالے شرانگیز پراپیگنڈہ کو ناکام کرنے کیلئے امن و اتحاد کے جوابی بیانیہ کا پرچار کریں اور پوری دنیا کویہ باور کرائیں کہ پاکستان ایک امن پسند اور مہذب قوم کا ملک ہے۔ انہوں نے ان خیالات کا اظہار بین الاقوامی اسلامی یونیورسٹی کے شعبہ اسلامک ریسرچ انسٹی ٹیوٹ کے زیراہتمام منعقد ہونیوالی دوروزہ ورکشاپ سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس دو روزہ تربیتی ورکشاپ کے دوران مجموعی طور پر 8 تعارفی سیشن منعقد ہوئے جن میں طلباکی بڑی تعداد نے شرکت کی۔ تعلیم و تربیت کے ذریعے نوجوانوں کو عصر حاضر کے تقاضوں کے عین مطابق شاہراہ ترقی پر گامزن کرنے کے موضوعات پر منعقد ہونیوالی اس اہم ورکشاپ کا مقصد نوجوانان پاکستان ایجنڈہ کو اجاگر کرکے ایک جامع معاشرہ کی تشکیل نو کیلئے نوجوانوں کے تعمیری کردار کو اجاگر کرنے کیلئے انہیں سوشل میڈیا پر جاری نظریاتی بحث کے بارے میں مفصل آگاہی دینا تھا۔ اس آگاہی اور تربیتی ورکشاپ کیلئے پیغام پاکستان مرکز برائے امن، مفاہمت اور تعمیر نو مطالعات نے بھی خصوصی طور پر تعاون کیا۔ ورکشاپ میں اسلامک ریسرچ انسٹی ٹیوٹ کے ڈائریکٹر جنرل پروفیسر ڈاکٹر ضیاالحق، اسسٹنٹ پروفیسر ڈاکٹر آفتاب احمد، ڈپٹی ڈائریکٹر رستم خان اور لیکچرار احمد منیر نے متفقہ قومی بیانیہ پیغام پاکستان کے اغراض ومقاصد اور اس کی اہمیت و آفادیت کے بارے میں لیکچرز دیئے۔ ورکشاپ کے اختتام پر شرکامیں اسناد بھی تقسیم کی گئیں۔ دریں اثناسائبر سیکورٹی اقدامات او ر نفسیاتی و سماجی بیداری کے بارے میں ایک اوراہم ورکشاپ روٹس اسکول سسٹم میں منعقد کی گئی۔ روٹس یونیورسٹی کالجز راولپنڈی میں سنٹر فار انٹرنیشنل اسٹرٹیجک اسٹڈیز کی ریسرچ آفیسرعافیرہ فردوس، سائیکو سوشل ٹرینرز اور محققین اسامہ نیازی اور اسفند اوصاف نے سائبر بدمعاشی، صارف کی شناخت کی چوری اور نجی ڈیٹا کے ضیاع کیلئے تخریبی عناصر کی جانب سے سائبر اسپیس کے غلط استعمال کے بارے میں تفصیلی لیکچرز بھی دئیے۔

الدرویش

مزید : علاقائی