ڈاکٹروں کی عدم گرفتاری پر وکلاء کا آئی جی آفس کے باہر دھرنا، عدالتوں کی تالہ بندی 

ڈاکٹروں کی عدم گرفتاری پر وکلاء کا آئی جی آفس کے باہر دھرنا، عدالتوں کی تالہ ...

  



لاہور(نامہ نگار)پی آئی سی کے ڈاکٹرز اور وکلاء کا تنازع طول پکڑ گیا، وکلاء نے گزشتہ روزسیشن کورٹ کے داخلی وخارجی راستوں کو تالے لگادیئے، وکلاء نے آئی جی آفس کے باہر 4گھنٹے سے زائدکادھرنا دیا۔ وکلاء نے پولیس کے خلاف نعرے بازی کی اور ڈاکٹرملزموں کی گرفتاری کا مطالبہ کیا،سیشن کورٹ میں وکلاء کی جانب سے تالہ بندی بھی کی گئی،وکلاء نے کسی کواندر نہیں آنے دیا اور مطالبہ کیا کہ جب تک تشدد کرنے والے ڈاکٹرملزموں کو گرفتار نہیں کیا جاتا تب تک سیشن کورٹ کے دروازے نہیں کھولیں گے، ایس ایس پی آپریشنزمحمد نویدسے مذاکرات کے بعد وکلاء منتشر ہوگئے۔ہڑتال کے باعث تمام مقدمات کی سماعت متاثرہوئی، سائلین خوارہونے کے بعدگھروں کو روانہ ہوگئے۔لاہور ڈسٹرکٹ بار کے صدر عاصم چیمہ کی زیرصدارت ایوان عدل میں اجلاس منعقد ہوا،صدر لاہور بارنے وکلاء سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ملزمان اگر گرفتاری نہیں دیتے ہم ان کو خود گرفتار کرائیں گے،ہم پر امن ہیں، ناجائز مطالبہ نہیں کر رہے، فوٹیج دیکھ لیں جو وکلا ء پرتشدد کر رہے ہیں ان کو فوری گرفتار کیا جائے۔اجلاس میں لاہور بار کے نائب صدر اعجاز بسرا کی جانب سے وکلا ء کو بتایا گیا کہ ایک ڈاکٹر کو گرفتار کیا گیاہے تاہم وہ مطالبہ کرتے ہیں دیگر ملزمان کو بھی گرفتار کیا جائے۔ اجلاس کے بعد عاصم چیمہ کی زیرصدارت وکلاء نے ملزم ڈاکٹروں کی عدم گرفتاری پر ایوان عدل سے آئی جی آفس تک ریلی نکالی اور وہاں پردھرنا دے دیا۔وکلاء کے احتجاج سے ٹریفک کانظام بھی درہم برہم گیا اور گاڑیوں کی لمبی قطاریں لگ گئیں۔

وکلاء دھرنا

مزید : صفحہ آخر