معلمی پیشہ کاقوموں کے بنانے اور سنوارنے کلیدی کردارہے، پروفسیر ابراہیم

معلمی پیشہ کاقوموں کے بنانے اور سنوارنے کلیدی کردارہے، پروفسیر ابراہیم

  



تیمرگرہ (بیورورپورٹ) جماعت اسلامی پاکستان کے مرکزی نائب امیر پروفیسر محمد ابراہیم خان نے کہا ہے کہ سرکاری اور پرائیویٹ تعلیمی ادارے تعلیم کو پیسہ کا زریعہ بنانے کے بجائے نئی نسل کی کر دار سازی میں اپنا کر دار ادا کریں حضورکو معلم بنا کر بھیجا گیا اور معلم کا پیشہ پیغمبری پیشہ ہے جو قوموں کی بنانے اور سنوارنے میں اہم رول ادا کرتا ہے وہ احیا ء العلوم بلامبٹ میں نیشنل ایسوسی ایشن فار ایجوکیشن (نافع) پاکستان کے زیر اہتمام لوئر دیر کے پرا ئیوٹ سکولوں کے پرنسپل اور اساتزہ کے لئے منعقدہ تعمیر سیرت کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا کانفرنس سے سابق وزیر خزانہ مظفر سید ایڈوکیٹ،امیر جماعت اسلامی لوئر دیر اعزازلملک افکاری، اسلامی نظامت تعلیم(نافع)کے مرکزی ڈا ئیریکٹرہدایت خان، صوبائی ڈائریکٹرمحفوظ خان، نائب صدر PEN کے پی عبدالودود، الخدمت فاونڈیشن کے صدر فضل محمود، سردا ر علی صدر نافع لوئر دیر نے بھی خطاب کیا انھوں نے کہا اساتذہ معاشرہ کی کریم ہے جو نسلوں کو بنانے میں اہم کر دار ادا کرتے ہیں اور بے دینی اور جہالت کے اندھیرے دور کرتے ہیں معا شرہ کی تبدیلی میں اساتذہ پر بھاری زمہ داری عائد ہوتی ہے انھوں نے اساتذہ پر زور دیا کہ وہ صالح اور نیک معاشرہ کے قیام میں اپنا کر دار اداکریں انھوں نے کہا کہ حضور ص نے پوری انسانیت کو علم سکھا یا انھوں نے کہا کہ پرائیویٹ تعلیمی ادارے تعلیم کے حوالے سے کافی بوجھ اٹھا یا ہے سابق صوبائی وزیر خزانہ مظفر سید ایڈوکیٹ نے کہا تعلیم صرف روزگار کا زریعہ نہیں بنانا چاہئے نجی تعلیمی ادارے یتیم اور نادار بچوں کو مفت تعلیم دی جائے انھوں نے کہا کہ انھوں نے اپنی دور وزارت میں لوئر دیر میں 6ہزار اساتذہ کو بھرتی کیا انھوں نے کہا کہ اساتذہ طالب علموں کی رول ماڈل ہوتے ہیں۔

مزید : پشاورصفحہ آخر