آپ کو دو،تین سال کی مہلت نہ دےدیں؟ لاہورہائیکورٹ لڑکی کی بازیابی سے متعلق کیس میں پولیس پر برہم

آپ کو دو،تین سال کی مہلت نہ دےدیں؟ لاہورہائیکورٹ لڑکی کی بازیابی سے متعلق ...
آپ کو دو،تین سال کی مہلت نہ دےدیں؟ لاہورہائیکورٹ لڑکی کی بازیابی سے متعلق کیس میں پولیس پر برہم

  



لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)لاہورہائیکورٹ لڑکی کی بازیابی سے متعلق کیس میں پولیس پر برہم ہو گئی اور18 دسمبر تک لڑکی کو بازیاب کرنے کا حکم دیدیا،جسٹس ملک شہزاد نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ آپ کو دو،تین سال کی مہلت نہ دےدیں؟ آپ نے عدالتی احکامات کو مذاق بنارکھا ہے،بظاہرلگتا ہے پولیس افسران ملزمان سے ملے ہوئے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق لاہور ہائیکورٹ میں لڑکی کی بازیابی کےلئے درخواست پر سماعت ہوئی،جسٹس شہزاداحمدنے لڑکی کی عدم بازیابی پرسی سی پی اولاہورپر اظہار برہمی کیا،سی سی پی اوذوالفقارحمیدنے کہاکہ کچھ روز پہلے ہی چارج سنبھالا ہے ،لڑکی کی بازیابی کیلئے ایک ماہ کی مہلت دی جائے،جسٹس ملک شہزاد نے کہاکہ آپ کو دو،تین سال کی مہلت نہ دےدیں؟آپ نے عدالتی احکامات کو مذاق بنارکھا ہے،بظاہرلگتا ہے پولیس افسران ملزمان سے ملے ہوئے ہیں،عدالت نے کہاکہ آئی جی پنجاب کو طلب اورافسران کیخلاف توہین عدالت کی کارروائی ہوگی ، عدالت نے لڑکی کی بازیابی کےلئے پولیس کو 18دسمبر تک مہلت دیدی۔

مزید : علاقائی /پنجاب /لاہور