سمجھنا نہیں چاہتے؟آپ یہ الفاظ استعمال کریں گے،جسٹس قاضی فائزعیسیٰ اٹارنی جنرل پر برہم

سمجھنا نہیں چاہتے؟آپ یہ الفاظ استعمال کریں گے،جسٹس قاضی فائزعیسیٰ اٹارنی ...
سمجھنا نہیں چاہتے؟آپ یہ الفاظ استعمال کریں گے،جسٹس قاضی فائزعیسیٰ اٹارنی جنرل پر برہم

  



اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)سپریم کورٹ میں فاٹاپاٹاایکٹ،ایکشن ان ایڈآف سول پاور کیس کی سماعت کے دوران جسٹس قاضی فائز عیسیٰ اٹارنی جنرل پربرہم ہوتے ہوئے کہاکہ سمجھنا نہیں چاہتے؟آپ یہ الفاظ استعمال کریں گے میں نے سوال کیا،اس کاجواب دینا آپ کا فرض ہے آپ میرے سوال کاقانون کے مطابق جواب دیں ۔

تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ میں چیف جسٹس آصف سعیدکھوسہ کی سربراہی میں بنچ نے فاٹاپاٹاایکٹ،ایکشن ان ایڈآف سول پاور کیس کی سماعت کی،جسٹس گلزاراحمد نے کہا کہ ہم آرٹیکل 10 کو دیکھناچاہئیں گے ،چیف جسٹس آصف سعید کھوسہ نے کہا کہ اس میں خلائی دشمن کا لفظ استعمال ہوا ہے یہ کون لوگ ہیں؟چیف جسٹس آصف سعید کھوسہ نے استفسار کیا کہ کیا یہ خلائی دشمن پاکستان کے شہری ہیں؟اٹارنی جنرل نے کہا کہ اگروہ غیر ملکی قوتوں کے ساتھ ملوث ہوگا تب کہلائے گاہمیں ان علاقوںمیں دشمن کی جانب سے بیرونی مداخلت کا سامنا رہا ۔

جسٹس قاضی فائز عیسیٰ نے کہاکہ آپ نے قوانین کی کتابوں کے نام نہیں دیئے ،مقدمہ زیرسماعت ہے آپ نے کتابوں کے نام پہلے دینے کی زحمت نہیں کی ،چیف جسٹس نے استفسار کیا کیاان لوگو ںکو حراستی مراکز میں رکھاجاتا ہے جن کی شناخت نہ ہو؟جسٹس قاضی فائز عیسیٰ نے استفسار کیا کہ میں سمجھنا چاہتاہوں کسی کو خلائی دشمن کیسے قراردیاجاتا ہے؟خلائی دشمن قراردینے کے بعدکسی قانون کے تحت کارروائی ہوتی ہے؟۔

اٹارنی جنرل نے کہا کہ مجھے لگتا ہے شاید معززجج سمجھنانہیں چاہتے، جسٹس قاضی فائز عیسیٰ نے اظہار برہمی کرتے ہوئے کہا کہ سمجھنا نہیں چاہتے؟آپ یہ الفاظ استعمال کریں گے میں نے سوال کیا،اس کاجواب دینا آپ کا فرض ہے آپ میرے سوال کاقانون کے مطابق جواب دیں ۔

مزید : قومی /علاقائی /اسلام آباد