چہل قدمی کرتے آدمی کو راستے میں ڈھیر سارے پولیس والے نظر آئے، لیکن دراصل وہ وہاں کیوں جمع تھے؟ حقیقت سامنے آئی تو زندگی کا سب سے بڑا جھٹکا لگ گیا

چہل قدمی کرتے آدمی کو راستے میں ڈھیر سارے پولیس والے نظر آئے، لیکن دراصل وہ ...
چہل قدمی کرتے آدمی کو راستے میں ڈھیر سارے پولیس والے نظر آئے، لیکن دراصل وہ وہاں کیوں جمع تھے؟ حقیقت سامنے آئی تو زندگی کا سب سے بڑا جھٹکا لگ گیا

  



لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) برطانیہ کے شہر ایشٹن میں ایک شخص صبح سویرے اپنے کتے کو ٹہلانے جنگل کی طرف لے گیا جہاں پولیس نے ایک علاقے کو بند کر رکھا تھا۔اس شخص کے پوچھنے پر پولیس نے بتایا کہ وہاں ایک درخت کے ساتھ پھندہ لے کر ایک لڑکی نے خودکشی کر لی ہے۔ جب پولیس نے اس لڑکی کی شناخت بتائی تو کتا ٹہلانے آئے اس شخص کے پیروں تلے زمین نکل گئی۔ وہ لڑکی کوئی اور نہیں بلکہ خود اس کی 17سالہ بیٹی تھی جس کے متعلق وہ سمجھ رہا تھا کہ وہ گھر میںا پنے بیڈروم میں سو رہی ہے۔

میل آن لائن کے مطابق اس لڑکی کا نام نکول گیسٹ تھا۔ وہ ڈپریشن کی مریض تھی اور ممکنہ طور پر ڈپریشن ہی کے باعث اس نے یہ انتہائی قدم اٹھایا۔ پولیس کے مطابق نکول نے علی الصبح اپنے سکول کے دوستوں کو میسج کیا جس میں اس نے لکھا کہ وہ رات بھر بہت پریشان رہی اور اب وہ ذہنی سکون کے لیے باہر واک پر جا رہی ہے۔ وہ اپنے گھر والوں کے بتائے بغیر اس جنگلی علاقے کی طرف آئی اور وہاں خودکشی کر لی۔ لڑکی کے باپ مارک گیسٹ کا کہنا تھا کہ ”میری بیٹی ڈپریشن کا سنگین عارضہ لاحق تھا اور اس کا علاج چل رہا تھا۔ آج وہ اپنے دوستوں کے ساتھ ایک پارٹی میں جانے والی تھی اوراس کے لیے اس نے رات کو مجھ سے پیسے لیے تھے۔ میں نے اس سے پوچھا بھی تھا کہ تمہیں مجھ سے اور کوئی بات کرنی ہے؟ تو اس نے نہیں میں جواب دیا۔وہ اپنی باتوں سے بالکل نارمل لگ رہی تھی۔“

مزید : ڈیلی بائیٹس