او آئی سی کو مردہ گھوڑا نہ کہا جائے، مسئلہ کشمیر پر ایوان میں کوئی ابہام اور تقسیم نہیں:شاہ محمود قریشی

او آئی سی کو مردہ گھوڑا نہ کہا جائے، مسئلہ کشمیر پر ایوان میں کوئی ابہام ...
او آئی سی کو مردہ گھوڑا نہ کہا جائے، مسئلہ کشمیر پر ایوان میں کوئی ابہام اور تقسیم نہیں:شاہ محمود قریشی

  



اسلام آباد(ڈیلی پاکستان  آن لائن)وزیرخارجہ شاہ محمودقریشی نےکہاہے کہ   کشمیرکےمسئلہ پرایوان میں کوئی تقسیم اوراَبہام نہیں اور نہ ہی کسی کمزور کا سوال پیدا ہوتا ہے،اسلامی ممالک کی تنظیم (او آئی سی) کو مردہ گھوڑا نہ کہا جائے، دوست بنانے کے بجائے موجودہ دوستوں کو بگاڑنا نہیں چاہیے،ہمیں او آئی سی کی ضرورت پڑتی رہے گی,پیپلزپارٹی،ن لیگ کےارکان کواس معاملےپربریفنگ کےلیےمدعوکیا.

نجی ٹی وی  کےمطابق قومی اسمبلی میں اظہارِ خیال کرتےہوئے شاہ  محمود قریشی نے کہا کہ کشمیر کے مسئلہ پر ایوان میں کوئی تقسیم اور ابہام نہیں اور نہ ہی کسی کمزور کا سوال پیدا ہوتا ہے،5اگست کےبھارتی اقدام پرپارلیمنٹ نےمتفقہ جواب دیا،مقبوضہ کشمیر کا مسئلہ 72 سال پرانا ہے تاہم حکومت نے حزبِ اختلاف کے تعاون سے جتنا اس مسئلے کو اجاگر کیا،اِس کی مثال نہیں ملتی جبکہ دنیا بھی حکومتی کوششوں کی معترف ہے،خود ہندوستانی حکمرانوں کے اقدامات کی وجہ سے بھی یہ معاملہ اُجاگر ہوا اور آج کوئی کشمیری رہنما ہندوستانی مؤقف کی حمایت نہیں کر رہا۔وزیر خارجہ نے کہا کہ ہندوستان نواز کشمیری رہنماؤں نے بھی   بھارتی مؤقف کو مسترد کیا اور 50 برس بعد کشمیر کے مسئلے پر سلامتی کونسل کا اجلاس بلایا گیا، ہندوستان نے اِس اجلاس کو روکنے کے لیے ہر ممکن کوشش کی تاہم ہم  نے اس معاملے کو بین الاقوامی سطح پر اجاگر کیا اور اب کشمیر کے معاملے پر دنیا کے ایوانوں میں بحث ہو رہی ہے,اقوام متحدہ کےمبصرین کومقبوضہ وادی میں نہیں جانےدیاگیا،  دنیانے  بھارت کےمؤقف کوتسلیم نہیں کیا،دنیامسئلہ کشمیرکومتنازع معاملہ سمجھتی ہے.

اُنہوں نے کہا کہ ہم نے جنیوا میں بھارت کو اس قدر بے نقاب کیا کہ وہ منہ دکھانے کے قابل نہیں رہا، وزیر اعظم نے اقوام متحدہ میں بھی کشمیر کا مسئلہ بھر پور طریقے سے پیش کیا، میں مسئلہ کشمیر پر حزب اختلاف کی رہنماؤں کو دفتر خارجہ مدعو کرتا ہوں۔شاہ محمود قریشی نے کہا کہ اسلامی ممالک کی تنظیم (او آئی سی) کو مردہ گھوڑا نہ کہا جائے، دوست بنانے کے بجائے موجودہ دوستوں کو بگاڑنا نہیں چاہیے۔ ہمیں او آئی سی کی ضرورت پڑتی رہے گی۔

مزید : اہم خبریں /قومی