کراچی، سندھ کے زمینوں کی بندربانٹ نامنظور،جماعت اسلامی سندھ

  کراچی، سندھ کے زمینوں کی بندربانٹ نامنظور،جماعت اسلامی سندھ

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

کراچی(اسٹاف رپورٹر)جماعت اسلامی سندھ کے امیروسابق رکن قومی اسمبلی محمد حسین محنتی نے سندھ کے زمینوں کی بندربانٹ پر اپنی تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہاہے کہ سندھ کی نگراں حکومت کے پاس زمین وفاق کو دینے کا مینڈیٹ نہیں ہے ان کا کام صرف صاف و شفاف انتخابات کراکے اقتدار منتخب نمائندوں کے حوالے کرنا ہے اس لیے یہ عوام دشمن فیصلہ فی الفور واپس لیا جائے،سندھ کی زرعی زمینوں پر سب سے پہلا حق یہاں کے کسانوں کا ہے، لاکھوں کسان بے زمین اور زمینداروں کے پاس کھیتی باڑی کرکے قوم کیلئے اناج،سبزیاں اگاتے ہیں وفاقی حکومت کو سرکاری زمینوں کو تقسیم کرنے کا اتنا ہی شوق ہے تو سندھ میں زمینوں کی بندربانٹ کی بجائے قابل کاشت زمین یہاں کے کسانوں کو دی جائیں۔ صوبائی امیر نے آج ایک بیان میں مزید کہا کہ حکومت سندھ کی جانب سے 52713ایکڑ زمین اداروں کو لیز پر دینے کی منظوری سندھ کے عوام سے سراسر زیادتی اور یہاں کے کسانوں کے ساتھ ظلم ہے، اداروں کو لاکھوں ایکڑ زرعی زمین لیز پر الاٹ کر رہی ہے لیکن صدیوں سے کھیتی باڑی کے شعبے سے وابستہ لاکھوں کسان آج بھی بے زمین کسمپرسی کی زندگی گذارنے پر مجبور ہیں،سندھ میں پہلے ہی وفاق اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کیخلاف استحصالی ایجنڈے کی وجہ سے ناراضگی پائی جاتی ہے ایسے فیصلوں سے اس میں مزید اضافے کا خدشہ ہے ،ایک جانب تو کسی عام شہری کو چند فٹ زمین پر غیرقانونی تعمیرات کی وجہ سے گرفتاری اور جرمانہ کردیا جاتا ہے تو دوسری جانب ہزاروں ایکڑ قیمتی زرعی زمین اداروں کے حوالے کرنا کہاں کا انصاف ہے۔جماعت اسلامی سندھ اس غیر دانشمندانہ اور ظالمانہ فیصلے کی مذمت کرتی ہے ، سندھ حکومت فی الفور عوام اور سندھ دشمن فیصلہ واپس لے۔