ایڈز قابل ِ علاج مرض 

      ایڈز قابل ِ علاج مرض 

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

ایڈز کے عالمی دن کے حوالے سے کراچی میں ایک سیمینار سے خطاب میں ماہرین صحت نے انکشاف کیا ہے کہ دنیا بھر میں ایچ آئی وی (ایڈز) کے مریضوں کی تعداد میں کمی واقع ہو رہی ہے لیکن پاکستان میں اِس مرض میں اضافہ ہو رہا ہے۔ ماہرین صحت نے  بتایا کہ ایڈز لاعلاج مرض نہیں ہے بلکہ اِس سے مکمل طور پر چھٹکارا ممکن ہے۔ مقررین نے یہ بھی بتایا کہ اِس مرض کا چونکہ اچھے الفاظ میں ذکر نہیں کیا جاتا،اِس کا شکارمریض اپنی بیماری کے حوالے سے مکمل معلومات سے بے خبر ہوتا ہے،اِسی لئے اِس کا ٹیسٹ کرانے سے گریز کرتا ہے۔ یہ مرض خواجہ سراؤں، بچوں اور خواتین میں تیزی سے پھیل رہا ہے۔ماہرین نے بتایا کہ یہ مرض کئی وجوہات کی وجہ سے ایک شخص سے دوسرے شخص کو منتقل ہو سکتا ہے اِس لئے احتیاطی تدابیر کے بارے میں جاننا اور ان کو ملحوظ خاطر رکھنا بہت ضروری ہے۔ وہاں یہ بھی انکشاف کیا گیا کہ لاڑکانہ میں بہت سے بچے اِس مرض میں مبتلا ہیں اور اس کو ایک ٹیسٹ کیس کے طور پر دیکھا جا رہا ہے۔ معاشرتی طور لوگ اِس بیماری کا علاج اِس لئے بھی نہیں کرواتے کہ ان کے متعلق برا تاثر قائم ہو گا، لوگ ان کو حقارت کی نظر سے دیکھیں گے، ان کے بارے میں غلط گفتگو کریں گے۔ اِس لئے ضروری ہے کہ موثر آگاہی مہم چلائی جائے،لوگوں کو بتایا جائے کہ اس سے نجات ممکن ہے اور اس سے منسلک غلط باتوں کے تاثر کو زائل کیا جائے۔ساتھ ہی ساتھ عوام کو ٹیسٹنگ کی سہولت بھی زیادہ بہتر انداز میں فراہم کرنی چاہیے۔ انسانی جان بہت قیمتی ہے اِس کی حفاظت کے لئے ہر ممکن کوشش کرنی چاہئے۔ ایڈز اور ایسی مہلک بیماریوں کے خاتمے کے لئے جدید تحقیق سے فائدہ اٹھائیں اور اس کے مطابق عمل کریں۔

٭٭٭٭٭

مزید :

رائے -اداریہ -