چھوٹے چھوٹے جھگڑوں کے باعث ہونیوالی پریشانیوں کو صرف وقتی طور پر اپنے اوپر سوار کریں، اورصبح طلوع ہونے سے پہلے ہی انہیں فراموش کر دیں 

چھوٹے چھوٹے جھگڑوں کے باعث ہونیوالی پریشانیوں کو صرف وقتی طور پر اپنے اوپر ...
چھوٹے چھوٹے جھگڑوں کے باعث ہونیوالی پریشانیوں کو صرف وقتی طور پر اپنے اوپر سوار کریں، اورصبح طلوع ہونے سے پہلے ہی انہیں فراموش کر دیں 

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

 مصنف: ڈاکٹر جوزف مرفی
مترجم: ریاض محمود انجم
قسط:120
میاں بیوی دعا کے مراحل کے مطابق، اکٹھے ہی دعا کریں اور ہمیشہ اکٹھے رہیں:
پہلا مرحلہ: چھوٹے چھوٹے جھگڑوں اور اختلافات کے باعث پید اہونے والی پریشانیوں کو صرف وقتی طور پر اپنے اوپر سوار کریں، اور رات کے بعد صبح طلوع ہونے سے پہلے ہی انہیں فراموش کر دیں۔ یقینی طور پر رات کو سونے سے قبل تیز و تند اور تلخ زبانی حملوں کے ضمن میں ایک دوسرے کو معاف کر دیں۔ صبح بیدار ہونے کے وقت محسوس کریں کہ لامحدود تخلیقی قوت آپ کے رگ وپے میں سرایت کر رہی ہے او رآپ کو تمام مسائل کا حل بتا رہی ہے۔ اپنی شریک حیات، افراد خانہ بلکہ تمام دنیا کو امن و سکون، طمانیت، خوشی، ہم آہنگی اور محبت و پیار پر مبنی خیالات سے فیض یاب کیجیے۔
دوسرا مرحلہ: ناشتہ کرتے وقت خداتعالیٰ کا شکر ادا کیجیے۔ خداتعالیٰ کا اس ضمن میں شکر ادا کیجیے کہ آپ کو انتہائی شاندار کھانا میسر ہے، آپ کو خوشحالی میسر ہے اور دیگر تمام نعمتیں بھی میسر ہیں۔ اس صورتحال کو یقینی بنائیں کہ ناشتے بلکہ دوپہر اور رات کے کھانے کے دوران گفتگو کے دوران گھریلو مسائل، پریشانیوں اور اختلافات کا ذکر نہ ہو۔ اپنے خاوند یا بیوی سے کہیے: ”تمہارا ہر طریقہ، ہر عمل قابل تعریف ہے اور تمام، میری چاہت، میری محبت اور میرا خلوص تمہارے ساتھ رہے گا۔“
تیسرا مرحلہ: ہر رات کو خاوند اور بیوی، باری باری دعا کریں۔اپنے شریک حیات کو اپنے لیے مجبوری اور بوجھ نہ سمجھیں۔ اپنے شریک حیات کیلئے نکتہ چینی، تنقید یا مذمت کی بجائے اس کے کام کو سراہیں اور اس کیلئے اخلاص پر مبنی رویے کا مظاہرہ کریں۔ ایک پرسکون گھر اور خوشگوار ازدواجی زندگی کی عمارت تعمیر کرنے کیلئے محبت، خوبصورتی، باہمی ہم آہنگی، باہمی عزت و افتخار، خداتعالیٰ پر بھروسہ اور تمام اچھی اور بہترین اشیاء کو بطور بنیاد استعمال کریں۔ رات کو سونے سے قبل انجیل مقدس کا مطالعہ کریں۔ جب آپ ان سچائیوں اور حقائق پر مبنی جذبات و احساسات کو اپنی ازدواجی زندگی کا حصہ بنا لیں گے، آپ کی زندگی مستقبل میں مزید خوشگوار ہوتی جائے گی اور آپ خداتعالیٰ کی مزید نعمتوں سے سرفراز ہوں گے۔
آپ کے عمل کا ایک جائزہ:
1:”ذہنی اور روحانی اصول و قوانین“ سے ناواقفیت اور بے خبری، ازدواجی زندگی میں اختلاف او رجھگڑے کا سبب ہے۔ نہایت ہی سائنسی انداز میں اکٹھے دعا مانگنے کے ذریعے، آپ دونوں اکٹھے ہنسی خوشی زندگی بسر کر سکتے ہیں۔
2:طلاق سے اجتناب اور گریز کا سب سے بہترین وقت ”شادی سے پہلے“ کاہے۔ اگر آپ مناسب اور صحیح طریقے کے ذریعے دعا مانگنا سیکھ جاتے ہیں تو آپ اپنے پسندیدہ ساتھی کو اپنی طرف متوجہ اور ملتفت کر سکتے ہیں۔
3:شادی، ایک مرد اور عورت کے درمیان ایک ایسا بندھن ہے جس کی بنیاد محبت و پیار ہے، ان دونوں کے دل ایک ساتھ دھڑکتے ہیں اور ان کے دل خدائی خصوصیات اور خوبیوں سے لبریز ہوتے ہیں۔
4:شادی، خوشگوار زندگی کی ضامن نہیں ہے۔ لوگ ابدی اور لازوال خدائی سچائیوں اور زندگی کی روحانی اقدار کو اپنا کر، خوشی و مسرت حاصل کرتے ہیں اور پھر خاوند اور بیوی، دونوں ایک دوسرے پر خوشی و مسرت نچھاور کر سکتے ہیں۔
5:آپ اپنے تخیل و تصور کے ذریعے کسی مرد یا عورت میں موجود خوبیوں اور خصوصیات کو پسند کرنے اور ان کو قبول کرنے کے ذریعے، اپنے متوقع ساتھی کو اپنی طرف متوجہ اور ملتفت کر سکتے ہیں اور پھر اس کے بعد آپ کا تحت الشعور، ایک پاکیزہ، مقدس اور روحانی انداز میں آپ دونوں کو یکجا کر دے گا۔
6:آپ اپنے مطلوبہ اور متوقع شریک حیات کے ذہنی اندازفکر کے مطابق اپنا ذہنی رویہ اپنایئے اور اختیار کیجیے۔ اگر آپ چاہتے ہیں کہ ایک ایماندار، مخلص اور محبت آمیز ساتھی آپ کو مل جائے تو آپ کوبھی لازمی طور پر خود کو ایماندار، مخلص اور محبت آمیز ثابت کرنا ہو گا۔
 7:آپ اپنی ازدواجی زندگی میں مسلسل غلطیوں کے متحمل نہیں ہو سکتے۔ جب آپ واقعی یہ سمجھتے ہیں کہ آپ اپنی پسند کا شخص حاصل کر سکتے ہیں، تو پھرآپ کے اس یقین کے باعث ہی آپ کی خواہش، تکمیل کے مراحل طے کرجاتی ہے۔ یقین کرنے کا مفہوم یہ ہے کہ کسی بھی چیز کو ایک سچائی کی حیثیت سے قبول کیا جائے اور پھر اپنے پسندیدہ ساتھی کو ذہنی طور پر قبول کیجیے۔(جاری ہے) 
نوٹ: یہ کتاب ”بُک ہوم“ نے شائع کی ہے۔ ادارے کا مصنف کی آراء سے متفق ہونا ضروری نہیں۔(جملہ حقوق محفوظ ہیں)

مزید :

ادب وثقافت -