مصور مارک شو گیل کی پینٹنگ جعلی نکلی ہزاروں ڈالر کی پینٹنگ جلانے کا فیصلہ

مصور مارک شو گیل کی پینٹنگ جعلی نکلی ہزاروں ڈالر کی پینٹنگ جلانے کا فیصلہ

 لندن (این این آئی)مصور مارک شوگیل کی ایک لاکھ پاﺅنڈ سے خریدی گئی پینٹنگ جعلی نکلی جس کے باعث خریدار نے جلانے کا فیصلہ کرلیا ہے میڈیا رپورٹ کے مطابق مارٹن لانگ نے پینٹنگ کو روسی مصور مارک شوگیل کا شاہکار سمجھ کر 1992 میں خریدا تھاپینٹنگ کا ماہرین نے ٹیسٹ کیا جس میں فیصلہ کیا گیا کہ یہ اصلی ہے یا نہیں۔کام کےلئے پینٹنگ کو شوگیل کمیٹی کے پاس پیرس بھجوایا گیا۔

 جہاں اب اسے فرانسیسی قانون کے تحت جلا دیا جائےگا تاہم اس فیصلے کو بہت زیادہ سخت، نامناسب اور بدمعاشی قرار دے کر تنقید کا نشانہ بنایا جا رہا ہے۔فلپ مولڈ جو اس پروگرام کے ماہر فنون ہیں نے بتایا کہ فیصلے کبھی بھی حتمی نہیں ہوتے اور جدید سائنس اور ٹیکنالوجی کی مدد سے ان پر نظرثانی کی جا سکتی ہے۔انہوں نے اس فیصلے کو غلط قرار دیا اور اس پر تنقید کی۔شوگیل جو تیس سال قبل فرانس میں انتقال کر گئے تھے کی پیدائش 1887 میں بیلاروس میں ہوئی تھی جنہیں جدیدیت کا بانی قرار دیا جا رہا ہے اور ان کا فن لاکھوں پاو¿نڈز میں فروخت ہوتا ہے۔

مزید : عالمی منظر


loading...