جنسی تعلقات کے ذریعے منتقل ہونے والی ایک اور انتہائی خوفناک بیماری، ایسا انکشاف کہ دنیا بھر کے ماہرین صحت کی نیندیں اڑگئیں

جنسی تعلقات کے ذریعے منتقل ہونے والی ایک اور انتہائی خوفناک بیماری، ایسا ...
جنسی تعلقات کے ذریعے منتقل ہونے والی ایک اور انتہائی خوفناک بیماری، ایسا انکشاف کہ دنیا بھر کے ماہرین صحت کی نیندیں اڑگئیں

  

نیو یارک (نیوز ڈیسک)زیکا وائرس کا خوف و ہراس پہلے بھی کچھ کم نہ تھا کہ اب یہ انکشاف ہو گیا ہے کہ یہ بھی ایڈز کے وائرس کی طرح جنسی تعلقات کے زریعے ایک سے دوسرے شخص میں منتقل ہو سکتا ہے۔ یہ خوفناک انکشاف ایک امریکی شخص میں زیکا وائرس کی تصدیق کے بعد سامنے آیا ہے۔

گلف نیوز کے مطابق ڈلاس کاﺅنٹی کے شعبہ صحت کے افسران کا کہنا ہے کہ اس شخص نے براعظم جنوبی امریکا کے کسی ملک کا سفر نہیں کیا بلکہ امریکا میں ہی زیکا وائرس کے شکار ایک فرد کے ساتھ جنسی تعلق استوار کیا تھا۔ اس خطرناک وائرس کے بارے میں یہ تصدیق تو پہلے ہی ہوچکی ہے کہ یہ ”ایڈیس ایجپتی“ نامی مچھر کے ذریعے منتقل ہوتا ہے لیکن جنسی تعلق کے ذریعے اس کے پھیلاﺅ کے متعلق ابھی تحقیقات جاری تھیں اور اس ضمن میں کافی شواہد تا حال دستیاب نہیں تھے۔ امریکا میں سامنے آنے والے زیکا وائرس کے اس کیس نے ناصرف اس مہلک وائرس کے امریکا پہنچنے کا اعلان کردیا بلکہ جنسی تعلق کے ذریعے اس کے پھیلاﺅ کی بھی تصدیق کردی۔

مزید جانئے: دھماکہ خیز مواد کے ذریعے مردانہ کمزوری کا علاج

امریکی محکمہ صحت حاملہ امریکی خواتین کو پہلے ہی ہدایات جاری کرچکا ہے کہ وہ جنوبی امریکا کے ممالک کا سفر نہ کریں لیکن یہ تازہ ترین کیس سامنے آنے کے بعد محکمہ صحت کا کہنا ہے کہ عنقریب جنسی تعلق اور وائرس کے پھیلاﺅ سے متعلق بھی نئی ہدایات جاری کی جائیں گی۔ خصوصی طور پر حاملہ خواتین کو وائرس سے متاثر ہونے کی صورت میں اپنے مرد شریک حیت سے جنسی تعلق محدود کرنے کی ہدایات جاری کی جاسکتی ہیں۔

زیکا وائرس کے جنسی تعلق سے پھیلاﺅ کا پہلا کیس سامنے آنے کے بعد متاثرہ افراد سے قربت کا تعلق استوار نہ کرنے کا مشورہ تو دیا جائے گا، البتہ مچھروں سے بچاﺅ کے روایتی طریقوں کو بھی بنیادی اہمیت کا حامل قرار دیا جارہا ہے، اور مچھر کے خاتمے کے تمام تر مروجہ اقدامات اورطریقے جاری رکھنے کی ہدایات دی جا رہی ہیں۔

مزید : ڈیلی بائیٹس