تاجر وں کا سیلز ٹیکس میں کمی ‘ سنگل ڈیجٹ ٹیکس سسٹم قائم کرنے کا مطالبہ

تاجر وں کا سیلز ٹیکس میں کمی ‘ سنگل ڈیجٹ ٹیکس سسٹم قائم کرنے کا مطالبہ

اسلام آباد ( آن لائن) تاجر برادری نے سیلز ٹیکس کی شرح میں فوری کمی کرنے اور سنگل ڈیجٹ ٹیکس سسٹم قائم کرنے کا مطالبہ کیا ہے ، وفاقی و صوبائی ٹیکس محکموں کی طرف سے بعض سروسز پر ڈبل ٹیکس عائد ہونے کی وجہ سے ٹیکس دہندگان کی مشکلات میں اضافہ ہو رہا ہے لہذا حکومت ان معاملات کو مزید سہل بنانے پر توجہ دے، وفاقی اور صوبائی ٹیکس محکموں کے مابین ٹیکس معاملات میں مکمل ہم آہنگی بہت ضروری ہے کیونکہ اس کے بغیر ٹیکس دہندگان کیلئے مزید مسائل پیدا ہوں گے ، پاکستان میں سیلز ٹیکس سمیت ٹیکسوں کے ریٹ بہت زیادہ ہیں۔

جس وجہ سے لوگ ٹیکس دینے سے کتراتے ہیں، حکومت سیلزٹیکس کو کم کر کے سنگل ڈیجٹ تک لائے جس سے لوگ ٹیکس دینے میں ترغیب محسوس کریں گے اور ٹیکس آمدن میں بھی بہتری پیدا ہو گی، موجودہ ٹیکس نظام بہت پیچیدہ اور مشکل ہے ٹیکس دہندگان کو بلواسطہ ٹیکسوں کے علاوہ تقریبا 10مختلف ٹیکس ادا کرنا پڑتے ہیں ، ٹیکس ریونیو کو بہتر کرنے کے لئے پیچیدہ ٹیکس نظام کو آسان بنایا جائے اور ٹیکسوں کو تعداد کو بھی کم کر کے مناسب سطح پر لایا جائے۔ان خیالات کا اظہار مختلف تاجر تنظیموں کے رہنماؤں نے ایک سیمینار سے خطاب کے دوران کیا۔سیمینا ر سے خطاب کرتے ہوئے اسلام آباد چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے صدر عاطف اکرام شیخ نے کہا کہ ٹیکس نظام میں بتدریج مثبت تبدیلیاں ہو رہی ہیں تاہم انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ حکومت تاجر تنظیموں کی مکمل مشاورت سے اور ٹیکس معاملات پر ان کے تمام تحفظات کو دور کر کے ٹیکس پالیسیاں بنائے جس سے زیادہ مثبت نتائج حاصل ہوں گے سمینار سے خطاب کرتے ہوئے دیگر مقررین نے کہاکہ سروسز پر عائد سیلز ٹیکس کو مزید بہتر بنانے اور پیچیدہ ٹیکس نظام کو بہتر کرنے کے بارے میں تجاویز پیش کیں۔ انہوں نے کہا کہ ٹیکس ریونیو کو بہتر کرنے کیلئے حکومت ایک آسان اور سادہ ٹیکس نظام کو تشکیل دینے کی کوشش کرے انہوں نے کہا کہ چھوٹے اور درمیانے درجے کے کاروباری ادارے فنانشل مینجمنٹ کی بہتر مہارت حاصل کر کے ٹیکس معاملات کو مزید بہتر طور پر نپٹا سکتے ہیں۔

انہوں نے ایس ایم ایز سمیت دیگر کاروباری اداروں میں ٹیکس معاملات کے بارے میں بہتر آگاہی پیدا کرنے کی ضرورت پر زور دیاجس سے ملک میں بہتر ٹیکس کلچر کو فروغ ملے گا۔ ۔

مزید : کامرس