اونی سوئیٹر موسم سرما میں مقبول پہنازا

اونی سوئیٹر موسم سرما میں مقبول پہنازا

ایک زمانہ تھا کہ سکولوں میں امور خانہ داری، سلائی اور کڑھائی اور اون سے بُنائی غیر نصابی سرگرمیوں کا اہم حصہ ہوتی تھی۔ رنگ برنگی اون کے گولے گھروں میں لڑھکتے پھرتے دکھائی دیتے تھے۔ لڑکیاں اور عورتیں اون سلائیاں سنبھالے اپنا وقت گزارتی تھیں۔ سوئیٹر،مفلر، دستانے، شالیں اور ٹی کوزیاں بنی جاتی تھیں۔ گھر کے بنے ہوئے سوئیٹر بچے بڑے سبھی شوق سے پہنتے تھے۔ سوئیٹروں پر مختلف ڈیزائن بنائے جاتے تھے۔ نوجوانوں میں سنگل والے سوئیٹر مقبول تھے۔مختلف ڈیزائن سوئیٹر بننے والی کی مہارت کا ثبوت ہوتے تھے۔ پھر رفتہ رفتہ گھریلو دستکاریوں اور ہنر و فن کی دوسری اشیاء کی طرح اون کی ہاتھ سے بنی چیزیں بھی طاق نسیاں پر رکھ دی گئیں۔ مشین سے بنے سوئیٹراشتہاروں سے نکل کر گھروں میں آ گئے اور فیشن کا حصہ بن گئے۔

گئے وقتوں میں سردیوں کی آمد سے پہلے ہی اون سلائیوں کا شغل شروع ہو جاتا بلکہ سارا سال یہ کام جاری رہتا تھا۔ سوئیٹروں کے ناپ لئے جاتے اور سردیوں میں پہناوے کا پورا اہتمام کیا جاتا۔ پھر موسم میں تبدیلی رونما ہونا شروع ہوئی۔ سردیوں کا دورانیہ کم ہونے لگا۔ اوورکوٹ عنقا ہونے لگے۔ مفلروں کا دور ختم ہو گیا بس کوٹ اور سوئیٹر سردیوں کا پہناوا رہ گئے۔رفتہ رفتہ سوئیٹروں کی مانگ بھی کم ہونے لگی اور لباس کوٹ اور جیکٹ تک محدود ہو گیا۔

اب سوئیٹر ایک بار پھر پسندیدگی کی فہرست میں شامل ہو گئے ہیں۔ مرد و خواتین اور بچوں کے لئے مختلف برانڈ کے سوئیٹر مارکیٹ میں موجود ہیں جن کے رنگ اور ڈیزائن دیدہ زیب ہیں۔ تاہم لوگ اب بھی ہاتھ سے بنے سوئیٹر کی خواہش رکھتے ہیں۔ وہ جانتے ہیں کہ ہاتھ سے بنے سوئیٹروں میں چاہتوں کی گرمی رچی ہوتی ہے۔ اچھا سوئیٹر شخصیت کو نکھارتا ہے۔ پہننے میں ہلکا ہوتا ہے اس لئے حرکت میں آسانی رہتی ہے۔ البتہ ایک چیز کی کمی محسوس ہوتی ہے۔ سوئیٹر پر چونکہ جیب نہیں ہوتی اس لئے قلم اور عینک سنبھالنا قدرے مشکل ہوتا ہے۔ اس کمی کا حل کوٹی کی صورت میں موجود ہے۔ پوری آستینوں اور فرنٹ اوپن کے ساتھ سوئیٹر میں دو پاکٹ ہوتی ہیں یوں کوٹ کا متبادل مل جاتا ہے۔

سوئیٹر اب مختلف ڈیزائن میں دستیاب ہیں۔ پوشاک کے ساتھ ان کی میچنگ کا خاص خیال رکھا جاتا ہے۔ سردیاں آتے ہی سوئیٹروں کی تشہیر شروع ہو جاتی ہے۔ اون کی مختلف قسموں میں طرح طرح کے سوئیٹر مارکیٹ کی زینت بنتے ہیں۔ سٹوڈیو کی مصنوعی برفباری میں خوش وضع ماڈل لڑکے اور لڑکیاں سوئیٹر پہن پہن کر لوگوں کو لبھاتے ہیں۔

تاہم ضروری ہے کہ لڑکیاں اور خواتین دوبارہ اون سلائیوں کی طرف رجوع کریں۔ ان کے ہاتھ بنائی میں مصروف ہوں گے تو انہیں موبائل فون کی غیر صحت مندانہ مشغولیت سے نجات مل جائے گی۔ ***

مزید : ایڈیشن 2