سبزہ زار میں شارٹ سرکٹ سے گیس سلنڈر پھٹ گیا ،4معصوم بھائی جاں بحق

سبزہ زار میں شارٹ سرکٹ سے گیس سلنڈر پھٹ گیا ،4معصوم بھائی جاں بحق

لاہور(وقائع نگار) سبزہ زار کے علاقہ میں رات گئے گھر میں آتشزدگی کے باعث چار بچے جاں بحق جبکہ ایک بری طرح جھلس گیا جس کی حالت ہسپتال میں نازک بتائی جاتی ہے ۔ریسکیو ٹیم نے موقع پر پہنچ کر آگ پر قابو پا لیا جبکہ پولیس نے جائے وقوعہ پر پہنچ کر کارروائی کا آغاز کر دیا ہے ۔پولیس کے مطابق سبزہ زار کے علاقہ حسن ٹاؤن کے رہائشی انور کے گھر میں اچانک شارٹ سرکٹ کے باعث آگ گئی جبکہ گھر میں صرف 5بچے موجود تھے اور والدین کسی رشتہ دا ر کی جانب ملنے گئے ہوئے تھے ۔شارٹ سرکٹ کے باعث لگنے والی آگ نے دیکھتے ہی دیکھتے پورے گھر کو اپنی لپیٹ میں لے لیا جس کی زد میں آ کر گھر میں موجود تمام بچے بری طرح جھلس گئے ۔اہل علاقہ نے اپنی مدد آپ کے تحت پانچوں بچوں کو قریبی ہسپتال میں منتقل کرنے کی کوشش کی لیکن راستے میں ہی چار بچے زخموں کی تاب نہ لا تے ہوئے جاں بحق ہو گئے جبکہ ایک بچے کی حالت جناح ہسپتال میں تشویشناک بتائی جاتی ہے ۔جاں بحق ہونے والوں میں 8سالہ عثمان ،3سالہ افنان ،6سالہ ارسلان اور7 سالہ نستعین شامل ہیں ۔اطلاع ملنے پر ریسکیو ٹیم نے موقع پر پہنچ کر آگ پر قابو پا یا جبکہ پولیس نے موقع پر پہنچ کر آگ لگنے کے حوالے سے معلومات حاصل کر نی شروع کر دی ہیں ۔پولیس کے مطابق ابتدائی تفتیش سے پتہ چلا ہے کہ جب آگ لگی تو اس نے گھر کو اپنی لپٹ میں لے لیا ۔گھر میں بجلی کے چند تار لٹک رہے تھے جو کہ کسی وجہ سے نیچے گرے اور ان میں شارٹ سرکٹ ہو گیا بعد ازاں گھر میں موجود گیس سلنڈر پھٹ گیا جس کی زد میں آ کر بچے بری طرح جھلس گئے ۔ اس وقوعہ کے حوالے سے محلہ داروں نے روزنامہ پاکستان سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا ہے کہ آگ تقریبا ساڑھے 9بجے رات کو لگی جس نے دیکھتے ہی دیکھتے پورے گھر کو اپنی لپیٹ میں لے لیا ۔پہلے تو وہ سمجھے تھے کہ گھر خالی پڑا ہے اور اس میں کوئی بھی موجود نہیں ہے پھر اچانک ایک چیخ کی آواز آئی انہوں نے آگے بڑ ھ کر گھر کو اندر سے دیکھنا چاہا تو گھر کفل تھا انہیں یقین ہو گیا کہ شاید گھر میں کوئی نہیں ہے پھر اچانک چیخیں اور زیادہ بڑھ گئیں جس سے محلہ دار مزید اکٹھے ہو گئے اور انہوں نے گھر کی کھڑکیوں کے راستے زبردستی گھر میں داخل ہو کر دیکھا تو بچے ایک کمرے میں موجود تھے اور آگ نے انہیں اپنی لپیٹ میں لے رکھا تھا ۔کوئی بچہ سانسیں توڑ رہا تھا اور کوئی شدید زخمی تھا ۔انہیں فوری طور پر شدید جھلسی ہوئی حالت میں نکال کر ہسپتال پہنچانے کی کوشش کی گئی جو کہ بے سود ثابت ہوئی ۔چار بچے راستے میں ہی دم توڑ گئے ۔جبکہ ایک کو شدید زخمی حالت میں ہسپتال داخل کروا دیا گیا ہے اس افسوسناک وقوع کے بعد وہاں لوگوں کا ایک ہجوم لگ گیا امدادی ٹیمیں بھی پہنچ گئیں بد قسمت والدین بھی وہاں آ گئے اور ہر آنکھ اشک بار ہو گئی ۔

مزید : صفحہ اول