لیڈی ہیلتھ ورکرز کی جانب سے توہین عدالت کی درخواست،وضاحت طلب

لیڈی ہیلتھ ورکرز کی جانب سے توہین عدالت کی درخواست،وضاحت طلب

لاہور(نامہ نگار خصوصی )لاہورہائیکورٹ نے عدالتی حکم کے باوجودلیڈی ہیلتھ ورکرزکاسروس سٹرکچرنہ بنانے اوربقایاجات کی عدم ادائیگی پرچیف سیکرٹری اورسیکرٹری صحت کوتوہین عدالت کی درخواست پرنوٹس جاری کرتے ہوئے 23فروری کو عملدرآمدرپورٹ طلب کرلی۔مسٹرجسٹس فیصل زمان خان نے لیڈی ہیلتھ سپروائزرناصرہ قمر ،ثریا وسیرسمیت دیگرکی درخواستوں پرسماعت کی۔ درخواست گزاروں کی جانب سے راجہ ذوالقرنین ایڈووکیٹ نے موقف اختیارکیاکہ سپریم کورٹ نے7 مارچ 2013ء کولیڈی ہیلتھ ورکرز، سپروائزرز اور ڈرائیوروں کومستقل کرنے کاحکم دیا۔یکم جولائی 2012ء سے بقایا جات ادانہیں کئے جارہے اورنہ ہی ان کا سروس سٹرکچر بنایاگیا ہے۔اس پر انہوں نے ہائیکورٹ سے رجوع کیا،عدالت نے 5مئی 2015ء کوچیف سیکرٹری اورسیکرٹری صحت کو بقایات جات کی ادائیگی اورسروس سٹرکچر کے حوالے سے ایک ماہ میں فیصلے کاحکم دیا۔عدالتی حکم کے باوجودسروس سٹرکچر بنایاگیانہ ہی ان کو بقایاجات کی ادائیگی کی گئی۔ اسسٹنٹ ایڈووکیٹ جنرل پنجاب سلمان محمود خواجہ نے بتایا کہ لیڈی ہیلتھ ورکرزکوبقایات جات کی ادائیگی اوران کے سروس سٹرکچرزکے حوالے سے حکومت اقدامات کررہی ہے ۔

مزید : صفحہ آخر