وزیر اعلیٰ سندھ نے ”شعر “کی ٹانگ توڑ دی ،شہلا رضا بے اختیار ہنس پڑیں

وزیر اعلیٰ سندھ نے ”شعر “کی ٹانگ توڑ دی ،شہلا رضا بے اختیار ہنس پڑیں
وزیر اعلیٰ سندھ نے ”شعر “کی ٹانگ توڑ دی ،شہلا رضا بے اختیار ہنس پڑیں

  

کراچی (مانیٹرنگ ڈیسک )وزیر اعلیٰ سندھ سید قائم علی شاہ نے سندھ اسمبلی میں ایک بار پھر غلط شعر اس انداز میں پڑھا کہ ایوان کو بے اختیار ہنسنے کا موقع دے دیا  جبکہ سپیکر شہلارضا بھی اپنی ہنسی روک نہ پائیں اور ہنستے ہوئے منہ نیچے کرلیا۔ایوان میں موجود بعض ارکان اسمبلی نے وزیر اعلیٰ کا شعر صحیح کرنے کی کوشش کی تو کچھ بے اختیار ہنسنا شروع ہو گئے ۔سند ھ اسمبلی میں خطاب کرتے ہوئے وزیر اعلیٰ سندھ نے شعر پڑھتے ہوئے کہا کہ ”مدعی لاکھ برا چاہے تو کچھ نہیں ہوتا ،وہ ہی ہوتا ہے جو منظور خدا ہوتا ہے“۔

وزیر اعلیٰ سندھ کا شعر سن کر ڈپٹی سپیکر شہلا رضا بھی اپنے جذبات پر قابو نہ رکھ سکیں ،پہلے تو ہونٹوں کو دانتوں میں چھبا کر کھسیانی ہنسی ہنسنا شروع کر دی اور سر نیچے جھکا لیا ،شہلا رضا سے جب ہنسی قابو میں نہ آئی تو زور دار قہقہ لگا کر بھی ہنسی اور پھر ساری قوت جمع کر کے اپنی ہنسی پر کنٹرول کیا ۔شعر سناتے ہوئے وزیر اعلیٰ سندھ کو پہلے مصرے میں اپنی غلطی کا احساس تک نہیں ہوا اور وہ دوسرے مصرے کی بھی ”ٹانگ “توڑنے کو تھے کہ ارکان اسمبلی نے فوری وزیر اعلیٰ سندھ کو دوسر ے مصرے کوپڑھ کر سنایا ۔

مزید : کراچی