سندھ ہائی کورٹ نے انصار برنی کی وی آئی پی پرکلچر کے خلاف درخواست سماعت کے لئے منظور کرتے ہوئے وفاقی اور صوبائی حکومت کو نوٹس جاری کردیئے

سندھ ہائی کورٹ نے انصار برنی کی وی آئی پی پرکلچر کے خلاف درخواست سماعت کے لئے ...
سندھ ہائی کورٹ نے انصار برنی کی وی آئی پی پرکلچر کے خلاف درخواست سماعت کے لئے منظور کرتے ہوئے وفاقی اور صوبائی حکومت کو نوٹس جاری کردیئے

  

کراچی (نیوز ڈیسک)سندھ ہائی کورٹ نے انسانی حقوق کی بین الاقوامی تنظیم انصار برنی ٹرسٹ انٹرنیشنل کے چیئرمین انصار برنی ایڈووکیٹ کی جانب سے ملک میں وی آئی پی پروٹوکول اوروی آئی پی کلچر سے ہونے والے مضر اور خطرناک نقصانات کے ازالے کے لئے سندھ ہائی کورٹ میں دائردرخواست منظور کرتے ہوئے وفاق کو نوٹس جاری کردیئے ہیں ۔

تفصیلات کے مطابق چیف جسٹس سندھ ہائی کورٹ  جسٹس سجاد علی شاہ اور جسٹس انور حسین پر مشتمل بینچ نے انصار برنی ایڈووکیٹ کی آئینی درخواست منظور کرتے ہوئے وفاق اور صوبائی حکومت کو نوٹس جاری کرتے ہوئے سماعت آئندہ تاریخ تک ملتوی کردی ۔اقوام متحدہ کے سابق مشیر خاص برائے انسانی حقوق انصار برنی ایڈووکیٹ نے مفاد عامہ کی پٹیشن عوام کے وسیع تر مفادات،انسانی حقوق، انسانی عظمت و وقار اور عوام الناس کی مشکلات کوحل کرنے کی غرض سے دائر کی تھی جس کے مطابق وی آئی پی کلچرو پروٹوکول اور کے دوران غیرضروری طور پر سڑکوں کی بندش اور اس کے نتیجے میں جنرل پبلک کو درپیش مسائل کوموثر طریقے سے حل کرنے کےلئے عدالت سے رجوع کیا ہے۔ انصار برنی نے درخواست میں صدر مملکت ممنون حسین ، وزیر اعظم نواز شریف، وفاقی وزیرِ داخلہ چوہدری نثار علی ، گورنر سندھ ڈاکٹر عشرت العباد خان اور چیف منسٹرسندھ قائم علی شاہ کو فریق بناتے ہوئے عدالت سے استدعا کی تھی کہ وی آئی پی موومنٹ کے دوران سڑکوں کی غیر ضروری بندش کو روکا جائے تاکہ انسانی حقوق کی پامالی روکی جاسکے۔

مزید : کراچی