آدمی کے گلے میں کتے کا پٹہ ڈال کر سڑک پر پھرانے والی ویڈیو کی اصل کہانی سامنے آگئی، حقیقت اتنی شرمناک کہ یقین کرنا مشکل

آدمی کے گلے میں کتے کا پٹہ ڈال کر سڑک پر پھرانے والی ویڈیو کی اصل کہانی سامنے ...
آدمی کے گلے میں کتے کا پٹہ ڈال کر سڑک پر پھرانے والی ویڈیو کی اصل کہانی سامنے آگئی، حقیقت اتنی شرمناک کہ یقین کرنا مشکل

  

لندن (نیوز ڈیسک) مغربی معاشرے کی بے راہروی کسی تعارف کی محتاج نہیں لیکن حال ہی میں اس کا ایک ایسا نیا روپ سامنے آیا کہ جس نے دنیا کو ایک دفعہ پھر حیران کرکے رکھ دیا۔ سوشل میڈیا پر سامنے آنے والی ایک ویڈیو نے دنیا میں ہلچل برپا کردی جس میں ایک نوجوان خاتون ایک مصروف شاہراہ پر ایک مرد کے گلے میں پٹہ ڈال کر اسے کتے کی طرح چلاتی نظر آئی۔ اب یہ انکشاف سامنے آیا ہے کہ یہ ناقابل یقین واقعہ برمنگھم شہر کی واش ووڈ ہیتھ روڈ پر پیش آیا اور درجنوں لوگوں نے ناصرف اس مرد کو خاتون کے پیچھے پیچھے کتے کی طرح چلتے دیکھا بلکہ کئی لوگوں نے اس کی ویڈیوز بھی بنائیں۔ چند دنوں میں 15 لاکھ سے زائد مرتبہ دیکھی جانے والی اس ویڈیو کا معمہ اس میں نظر آنے والی خاتون نے خود ہی حل کیا ہے، اور اس ویڈیو کی حقیقت اس میں نظر آنے والے مناظر سے بھی زیادہ حیرت انگیز ثابت ہوئی ہے۔

مزید پڑھیں: انٹرنیٹ پر فحش فلمیں دیکھنے والوں کی تعداد میں ہوشربا اضافے کی انتہائی عجیب و غریب وجہ سامنے آگئی

ویڈیو میں نظر آنے والی 21 سالہ خاتون پیج براﺅن ہے جو کہ برمنگھم شہر سے تعلق رکھتی ہے۔ اس کا کہنا ہے کہ ویڈیو میں کتے کا روپ دھارے نظر آنے والا شخص اس کا کلائنٹ ہے جو ایک دوسرے شہر سے جہاز کا سفر کرکے اس کے پاس پہنچا اور ایک ہزار پاﺅنڈ (تقریباً ڈیڑھ لاکھ پاکستانی روپے) کی فیس ادا کرکے خصوصی خدمات حاصل کیں۔ پیج براﺅن کا کہنا ہے کہ یہ خصوصی خدمات کلائنٹ کو کتا بنا کر سڑک پر واک کرانے اور اس کے ساتھ کتوں جیسا تمام تر سلوک کرنے پر مشتمل تھیں۔

خاتون نے حیرتناک انکشاف کیا ہے کہ اس کے مرد کلائنٹ اس کے ہاتھوں ذلیل ہونا پسند کرتے ہیں اور اسی بے عزتی کی فیس ادا کرتے ہیں۔ اس کا کہنا ہے کہ تقریباً 45 کلائنٹ اس وقت بھی اس کے ساتھ رابطے میں ہیں اور ویڈیو میں نظر آنے والا شخص بھی انہیں میں سے ایک ہے۔ پیج براﺅن نے بتایا ہے کہ اس نے ناصرف اس شخص کے گلے میں رسی باندھ کر اسے سڑک پر واک کروائی بلکہ اس کی ٹنڈ بھی کی ، اس کے سر پر انڈے توڑے اور اس کے اصرار پر اسے کتوں کو دی جانے والی غذا بھی کھلائی۔

خاتون کا کہنا ہے کہ طے شدہ فیس کے علاوہ اس کے کلائنٹ اسے انتہائی مہنگے تحائف بھی دیتے ہیں۔ اس نے اپنے سوشل میڈیا اکاﺅنٹ پر ان تحائف کی درجنوں تصاویر پوسٹ کی ہیں جن میں مہنگے ترین ہینڈ بیگ اور آئی فون جیسے تحائف بھی شامل ہیں۔ پیج براﺅن کہتی ہے کہ اس کی خدمات صرف مردوں کو ذلیل اور بے عزت کرنے تک محدود ہیں، وہ خود کو چھونے کی اجازت نہیں دیتی، البتہ جب کلائنٹ اس کے پیروں کو سونگھنے اور چاٹنے کی ضد کرتے ہیں تو وہ اس کی اجازت دے دیتی ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس