جیننگ فیکٹریوں میں کپاس کی ایک کروڑ 5 لاکھ سے زائد گانٹھوں کی آمد

جیننگ فیکٹریوں میں کپاس کی ایک کروڑ 5 لاکھ سے زائد گانٹھوں کی آمد

ملتان (اے پی پی)پاکستان کاٹن جنرز ایسوسی ایشن (پی سی جی اے)نے کپاس کی فیکٹریوں میں آمد کے اعدادو شمار جاری کر دیئے ہیں جس کے مطابق یکم فروری تک ملک کی جننگ فیکٹریوں میں1کروڑ 6لاکھ 5ہزار746گانٹھ کپاس آئی۔ جبکہ گزشتہ سال یکم فروری 2018تک 1کروڑ14 لاکھ32ہزار874گانٹھ کپاس فیکٹریوں میںآئی تھی۔گزشتہ سال کے مقابلے میں اس دفعہ کپاس کی آمدمیں کمی کی شرح 7.23فیصد رہی ۔صوبہ پنجاب کی فیکٹریوں میں64لاکھ 61ہزار080گانٹھ کپاس آئی ہے۔پنجاب میں کمی کی شرح10.03 فیصد رہی ۔صوبہ سندھ کی فیکٹریوں میں41لاکھ 44ہزار 666گانٹھ کپاس فیکٹریوں میں آئی ہے اورصوبہ سندھ میں کمی کی شرح 2.52فیصد رہی ۔ یکم فروری2019تک فیکٹریوں میں آنے والی کپاس سے1کروڑ 5لاکھ46ہزار192گانٹھ روئی تیار کی گئی ۔ ٹریڈنگ کارپوریشن آف پاکستان(ٹی سی پی )نے کاٹن سیزن 2018-19میں خریداری نہیں کی ہے ۔ضلع ملتان میں یکم فروری2019ء تک 2لاکھ 37ہزار889گانٹھ کپاس، ضلع لودھراں میں 1لاکھ39ہزار268گانٹھ کپاس، ضلع خانیوال میں 5لاکھ22 ہزار472گانٹھ کپاس ، ضلع مظفر گڑھ میں 3لاکھ 24ہزار 922گانٹھ کپاس،ضلع ڈیرہ غازی خان میں 4لاکھ 72 ہزار 606 گانٹھ کپاس، ضلع راجن پور میں 4لاکھ 25 ہزار295گانٹھ کپاس، ضلع لیہ میں 2لاکھ39 ہزار090گانٹھ ضلع وہاڑی میں 4لاکھ 31 ہزار 276گانٹھ، ضلع ساہیوال میں 2لاکھ 8ہزار 554 گانٹھ ، ضلع میانوالی میں 1 لاکھ 2ہزار228گانٹھ ، ضلع رحیم یار خان میں11لاکھ81ہز ار339گانٹھ کپاس، ضلع بہاولپور میں 9 لاکھ 59 ہزار 138 گانٹھ ، ضلع بہاولنگر میں 9لاکھ52ہزار320گانٹھ کپاس فیکٹریوں میں آئی ہے۔

ضلع سانگھڑمیں 12لاکھ89ہزار369گانٹھ کپاس، ضلع میر پور خاص میں1لاکھ21ہزار942 گانٹھ کپاس، ضلع نواب شاہ میں3لاکھ83ہزار272گانٹھ کپاس، ضلع نو شہرو فیروز میں 3لاکھ66ہزار179 گانٹھ کپاس، ضلع خیر پور میں 3لاکھ75ہزار061گانٹھ کپاس ، ضلع سکھر میں6لاکھ24ہزار715گانٹھ کپاس، ضلع جام شورومیں 1لاکھ3ہزار791گانٹھ کپاس اور ضلع حیدرآباد میں 2 لاکھ34 ہزار 310گانٹھ کپاس فیکٹریوں میں آئی ہے۔ پی سی جی اے مطابق جنرز کے پاس غیر فروخت شدہ سٹاک 14لاکھ89 ہزار948گانٹھ کپاس اور روئی موجود ہے ۔

Bac

مزید : کامرس