حکومت فلور ملوں کی بحالی کیلئے کوئٹہ گندم فرائم کرے: خواجہ حبیب

حکومت فلور ملوں کی بحالی کیلئے کوئٹہ گندم فرائم کرے: خواجہ حبیب

لاہور( نیوز رپورٹر )ایران پاک فیڈریشن آف کلچر اینڈ ٹریڈ کے صدر خواجہ حبیب الرحمان نے کہا ہے کہ پنجاب حکومت کی جانب سے گندم برآمد کر نے کیلئے کم از کم25 ہزار ٹن اور زیادہ سے زیادہ 50 ہزار ٹن کیلئے بولیاں طلب کر نا فلور ملز انڈسٹری کا معاشی قتل کر نے کے مترادف ہے ، پنجاب کی1000میں سے800 ملیں پہلے ہی بند ہیں اور جو200 چل رہی ہیں وہ بھی حکومت کی ناقص پالیسیوں کی وجہ سے بند ہونے کے قریب پہنچ چکی ہیں، حکومت فلور ملوں کو گندم بذریعہ کوٹہ دے تاکہ تباہ حال انڈسٹری دوبارہ اپنے پا ؤں پر کھڑی ہو سکے ۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے اپنے آفس میں فلور ملز ایسوسی ایشن کے وفد سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔انہوں نے کہا کہ سرکاری اداروں کی جانب سے فلور ملوں کے واجب الاادا چیک بھی کلیئر نہیں کئے جا رہے جس کی وجہ سے انڈسٹری کو ملازمین کی تنخواہیں ادا کر نے میں بھی مشکلات کاسامنا ہے۔ ملک کی معاشی صورتحال پر گفتگو کرتے ان کا کہنا تھا کہ خراب معاشی صورتحال کی وجہ سے ملک میں مہنگائی کی شرح ساڑھے چار سال کی بلند ترین سطح پر پہنچ گئی ہے،غیر ملکی قرضوں سے مسائل حل نہیں ہوں گے، ترقی کیلئے انڈسٹریز کو فروغ دینا ہوگا اور سر مایہ کاروں کو درپیش مسائل حل کر نا ہو ں گے۔انہوں نے مزید کہاکہ حکومت بنکوں سے قرضے لے کر ہڑپ کرنے اور قومی خزانہ لوٹ کر بیرونی بنکوں میں دولت جمع کرنے والوں کی گردنوں پر ہاتھ ڈالے تو معیشت میں بہتری لائی جاسکتی ہے اورمہنگائی کو بھی کنٹرول کیا جاسکتاہے ۔ زبانی دعوے اور باتیں کرنے سے معاشی حالات میں بہتری نہیں لائی جاسکتی ۔

مزید : کامرس