سپین میں کرپشن اور دہشت گردی روکنے کیلئے 500 یورو کے نوٹ پر پابندی

سپین میں کرپشن اور دہشت گردی روکنے کیلئے 500 یورو کے نوٹ پر پابندی

میڈرڈ (این این آئی)سپین نے کرپشن اور دہشت گرد ی روکنے کیلئے پانچ سو یورو کا نوٹ پرنٹ کرنے پر پابندی عائد کر دی ہے۔غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق بینک آف سپین نے یورپین بینک کے نئے سسٹم کو جو مئی 2016 کو رائج کیا گیا تھا فالو کرتے ہوئے ،آئندہ سے 500 کے نوٹ چھاپنے پر پابندی لگادی اس پابندی کی وجہ سے آئندہ 500کا کوئی نوٹ مزید نہیں چھاپا جائے گا(بقیہ نمبر29صفحہ12پر )

۔یاد رہے کہ یورپ بھر اور خاص کر اسپین میں کرپشن اور دہشت گردی کے لیے فنڈز اکٹھا کرنے میں سب سے زیادہ پانچ سو یورو کا نوٹ استعمال کیا جاتا ہے اور یہ اقدام بھی اس لیے اٹھایا گیا ہے تاکہ دہشتگردی اور کرپشن کو روکا جا سکے۔اب تک 500 یورو کے جو نوٹ پہلے سے ہی مارکیٹ میں موجود ہیں یا عوام الناس کے پاس ہیں ان کے حوالے سے کہا گیا ہے کہ جو نوٹ مارکیٹ میں پہلے سے گردش کر رہے ہیں، ان کی ویلیو میں کوئی کمی نہیں آئے گی، آپ اس سے خریدو فروخت کرسکیں گے اورکسی بھی بینک سے انہیں تبدیل بھی کرایا جاسکے گا۔بینک آف سپین کے مطابق اب تک گردش شدہ 5 سو یورو نوٹوں کی مالیت 4 کھرب 81 ارب روپے ہے، 500 کا نوٹ کب تک مارکیٹوں میں گردش کرے گا،کے بارے میں بتایا گیا ہے کہ جب تک پانچ سو یورو کا نوٹ خود ختم نہیں ہو جاتا یا جب تک کوئی نیا فیصلہ نہیں لیا جاتا تب تک 5 سو یورو کے نوٹ کا وجود اور ویلیو برقرار رہے گی۔اسی طرح بینک آف یورپ اور بینک آف سپین کی طرف سے 100 یورو اور 200 یورو کے نوٹوں میں تبدیلی،ڈیزائن اور بناوٹ پہلے سے مختلف ہوگی ،یہ نوٹ رواں ہفتے میں مارکیٹ اور بینکوں کو گردش کے لیے پیش کر دیئے جائیں گے۔ نوٹوں کی رنگت کو تھوڑا اور واضح کیا گیا ہے اور سیکیورٹی پٹی اور یورپین یونین کے نشان کو مزید گہرا کر دیا گیا ہے۔ان تبدیلیوں سے سو اور دو سو یوروکے نوٹ کی کاپی بنانا یا انہیں جعلی شکل دینا بہت مشکل ہو گا، نئے نوٹوں کی بناوٹ کے ساتھ ساتھ ڈیزائن پہلے سے کافی اْبھرے ہوئے ہوں گے اور ہاتھ لگانے سے ہی نقل اور اصل کا آسانی سے پتا چل جائے گا۔

یورو

مزید : ملتان صفحہ آخر