جنوبی ایشیاء میں ترقی کیلئے افغانستان میں امن ناگزیر،پولش سفیر

جنوبی ایشیاء میں ترقی کیلئے افغانستان میں امن ناگزیر،پولش سفیر

اسلام آباد ( آن لائن) پولینڈ کے سفیر پیوٹر اوپلنسکی نے کہا ہے کہ پولینڈ اور پاکستان کے مابین تاریخی سیاسی، معاشی اور دفاعی تعلقات موجود ہیں، دونوں ممالک کے مابین تجارتی حجم 500 ملین یورو سے زائد ہے تاہم اس میں اضافے کی گنجائش موجود ہے، جنوبی ایشیاء کی پائیدار ترقی اورا ستحکام کیلئے افغانستان میں قیام امن ناگزیر ہے، پولینڈ خطے میں امن واستحکام کیلئے افغان طالبان اور(بقیہ نمبر35صفحہ12پر )

امریکہ کے مابین مذاکرات کی حمایت کرتا ہے اور مذاکرات کیلئے پاکستان کے کردار کی تعریف کرتا ہے،پولینڈ ، پاکستان کیساتھ تعلقات کو اہمیت دیتا ہے ۔ بہت جلد پولش سرمایہ کار انفراسٹکچر، توانائی اور دیگر شعبوں میں سرمایہ کاری کیلئے پاکستان کا دورہ کرینگے، ان خیالات کا اظہا ر انہوں نے آن لائن کیساتھ ایک خصوصی انٹرویو کے دوران کیا۔ پاکستان میں تعینات پولینڈ کے سفیر پیوٹر اوپلنسکی کا کہنا ہے کہ وہ پاکستان کو دوسرا گھر سمجھتے ہیں ، سال 1999ء میں پاکستان میں پہلی مرتبہ بطور ڈپٹی ہیڈ آف مشن تعیناتی کے دوران اپنے خاندان کے ساتھ پاکستان میں 6سال گزارے، ان کی خواہش تھی کہ دوبارہ پاکستان آسکیں جو بطور پولینڈ کے سفیر کے طور پوری ہوگئی ، پاکستان کو جغرافیا ئی لحاظ سے بہترین لوکیشن پر ہونے کی وجہ سے بہت اہمیت حاصل ہے ،یہاں کے لوگ بہت ملنسار اور خوبصورت ہیں،شمالی علاقہ جات کی خوبصورتی بین الاقوامی سیاحوں کیلئے توجہ کا مرکز ہے، پولینڈ نے جی ایس پی پلس اسٹیٹس کیلئے پاکستان کی حمایت کی تھی جس کے بعد یورپی ممالک میں پاکستانی مصنوعات کی مانگ میں اضافہ ہوا ہے۔پولینڈ کے سفیر نے بتایا پنجاب سمیت دیگر علاقوں میں گزشتہ سالوں کے دوران انفراسٹکچر کے کئی منصوبہ جات شروع کیے گئے ہیں، انسانی حقوق اور بین الاقوامی غیر سرکاری تنظیموں سے متعلق ایک سوال کے جواب میں پیوٹر اوپلنسکی نے کہا کہ اس سلسلے میں پولینڈ مقامی تنظیموں کے ساتھ ملکر کام کررہا ہے ، پولینڈ کاسفارتخانہ کاغان وادی میں غیر سرکاری سکولوں میں معاونت کررہا ہے جہاں پر بچوں کو بہترتعلیم اور صحت کی سہولیا ت دی جار ہی ہیں۔اسلام آباد میں بری اما م کے علاقے میں تعلیم اور صحت کے شعبے میں معاونت کررہے ہیں۔

مزید : ملتان صفحہ آخر