شاہ زیب قتل کیس: 24گھنٹوں میں ملزمان کی گرفتاری،جائیدادیں ضبط کرنے کا حکم ،چھاپے شروع

شاہ زیب قتل کیس: 24گھنٹوں میں ملزمان کی گرفتاری،جائیدادیں ضبط کرنے کا حکم ...
شاہ زیب قتل کیس: 24گھنٹوں میں ملزمان کی گرفتاری،جائیدادیں ضبط کرنے کا حکم ،چھاپے شروع

  

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) سپریم کورٹ نے شاہ زیب کے قاتلوں کو 24گھنٹے میں گرفتاری کا حکم دیتے ہوئے ملزمان کی جائیداد او ر بنک اکاﺅنٹس منجمد کرنے کی ہدایت کردی ہےجس کے بعد پولیس نے پھرتی دکھاتے ہوئے حیدرآباد میں تالپور ہائوس سمیت مختلف مقامات چھاپے مارنا شروع کردیے ہیں   ۔ ازخود نوٹس کیس کی سماعت کے دوران  عدالت نے اپنے ریمارکس میں کہاکہ پولیس فائل دیکھنے سے پتہ چلتاہے کہ پولیس نے غفلت برتی ، آئی جی سندھ جان بوجھ کر عدالت میں پیش نہیں ہوئے ، عدالت نے ملزمان کے پاسپورٹ منسوخ کرنے کا حکم بھی دیدیا۔چیف جسٹس کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے دو رکنی بنچ نے شاہ زیب قتل کے از خود نوٹس کیس کی سماعت کی ۔دوران سماعت عدالت نے واضح کیاکہ کیس خراب ہوا تو ذمہ داری پولیس پر ہوگی ، آئی جی سندھ کے پیش نہ ہونے پر چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری نے برہمی کا اظہار کرتے ہوئے آئی جی سندھ جان بوجھ کر پیش نہیں ہوئے ، عدالت نے5 دن قبل کہا تھا کہ ملزموں کو گرفتار کر کے پیش کیا جائے ،معلوم ،آئی جی سندھ شام تک ملزمان کو گرفتار کریں ورنہ عہدے پر نہیں رہیں گے ۔ ایڈیشنل آئی جی سندھ نے عدالت کو بتایا کہ ملزمان کی گرفتاری کے لیے کوششیں جاری ہیں۔ چیف جسٹس پاکستان کا کہنا تھا کہ اتنااہم کیس ہے اور پوری دنیا میں شور مچا ہوا ہے، کسی غریب کا بچہ مارا گیا اور پولیس بااثر افراد کے دباﺅ میں آ جاتی ہے جنہوں نے ملزمان کو فرار کرانے میں مدد کی انہیں بھی گرفتار کیا جائے، سندھ پولیس کے 5لوگ جہاز میں بیٹھ کر یہاں تاریخ لینے آ گئے ہیں۔ جسٹس گلزار احمد نے کہا کہ شہر میں اتنا بڑا کرائم ہو گیا، کیا پولیس سو رہی ہے، کسی کو کچھ پتہ نہیں ،صرف سیرکرنے اسلام آباد آگئے ہیں ، آئی جی پولیس پیدل آئیں یا راکٹ پر ،عدالت میں پیش ہوں اور اور مزید سماعت دن بارہ بجے تک ملتوی کردی۔دوبارہ سماعت شروع ہوئی تو ایڈیشنل آئی جی نے بتایاکہ جہاز کی عدم دستیابی کی وجہ سے آئی جی پیش نہیں ہوسکے ۔ عدالت نے ملزمان کے پاسپورٹ منسوخ ، جائیدادیں ضبط اور بنک اکاﺅنٹس منجمد کرنے کا حکم دیتے ہوئے سماعت سات جنوری پیر تک ملتوی کردی ۔واضح رہے کہ 25دسمبر کو کراچی میں 20 سالہ نوجوان شاہ زیب جو اپنی بہن کے ولیمے سے واپس آرہا تھا اس دوران اپارٹمنٹ کی پارکنگ میں دونوجوانوں سے تھوڑی سی چپقلش ہوئی جس کے تھوڑی دیر بعد ان نوجوانوں نے اسے گولیاں مار کر ہلاک کردیا۔

مزید : اسلام آباد