باپ کے سفارتکار بنتے ہی ملالہ یوسف زئی برطانوی ہسپتال سے ڈسچارج

باپ کے سفارتکار بنتے ہی ملالہ یوسف زئی برطانوی ہسپتال سے ڈسچارج
باپ کے سفارتکار بنتے ہی ملالہ یوسف زئی برطانوی ہسپتال سے ڈسچارج

  

 لندن (بیورو رپورٹ) پاکستان میں طالبان کے حملے میں زخمی ہو نے والی طالبہ ملالہ یوسف زئی کو برمنگھم کے کوئن الزبتھ ہسپتال سے ڈسچارج کر دیا گیا ہے۔ اب اس کا باقی علاج معالجہ گھر پر ہی کیا جائے گا۔ برطانوی ذرائع ابلاغ کے مطابق ملالہ یوسف زئی اور دو ساتھی طالبات نو اکتوبر 2012ءکو قاتلانہ حملے میں شدید زخمی ہوئی تھیں جبکہ اس حملے کی ذمہ داری طالبان نے قبول کر لی تھی۔ سینئر ڈاکٹرز اور طبی ماہرین نے انہیں مزید علاج کی غرض سے کوئن الزبتھ ہسپتال برمنگھم منتقل کرنے کا فیصلہ کیا جہاں وہ ایڈوانس طبی امداد کے بعد انیس اکتوبر کو کوما سے باہر آگئیں اور انہیں گزشتہ روز ہسپتال سے ڈسچارج کر دیا گیا۔ ملالہ یوسف زئی کو ہسپتال سے اس وقت ڈسچارج کیا گیا ہے جب پاکستان کی حکومت نے اس کے باپ کو سفارتخانے میں تعلیم کا اتاشی مقرر کیا ہے ۔

مزید : سوات