تجارتی خسارہ کنٹرول کرنے کیلئے معاشی اصلاحات کی ضرورت ہے

تجارتی خسارہ کنٹرول کرنے کیلئے معاشی اصلاحات کی ضرورت ہے

لاہور(پ ر) ممتازتاجر رہنما وفیروز پور بورڈ لاہور کے سینئر نائب صدر خادم حسین ایگزیکٹو ممبرلاہور چیمبرز آف کامرس نے کہا ہے کہ رواں مالی سال کے پہلے پانچ ماہ کے دروان کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ91فیصد سے بڑھنا ملکی معاشی صورتحال کے نقصان دہ ہے اور درامدات میں اضافہ اور برآمدات میں کمی کے باعث تجارتی خسارہ بڑھ رہا ہے جس کو کنٹرول کرنے کیلئے معاشی اصلاحات کی اشد ضرورت ہے ان خیالات کا اظہار انہوں نے فیروز پور بورڈ کے تاجروں کے وفد سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔خادم حسین نے کہا کہ برآمد کنندگان کئی سالوں سے سیلز ریفنڈز کی عدم ادائیگی سے سرمائے کی قلت کا شکار ہیں جس کی وجہ سے وہ ملکی اشیاء کی بیرون ملک برآمدات میں عدم دلچسپی کا اظہار کررہے ہیں نیز صنعتی مقاصد کیلئے بجلی و گیس کی بڑھتی ہوئی قیمتوں کے باعث پیداواری لاگت میں اضافہ سے اشیاء کی قیمتیں بڑھ رہی ہیں جس کے باعث بین الاقوامی مارکیٹ میں مہنگی پاکستانی اشیاء کی مانگ میں کمی سے برآمدات مسلسل تنزلی کا شکار ہیں اس لیے صنعتی مقاصد کیلئے بجلی و گیس کی قیمتوں میں کمی کی جائے تاکہ پیداواری اشیاء کی لاگت میں کمی سے برآمدات میں اضافہ اور زرمبادلہ کے ذخائر بڑھ سکیں ۔اگر بجلی و گیس کی قیمتیں اسی طرح بڑھتی رہیں تو مستقبل میں برآمدات میں مزید کمی اور تجارتی خسارہ بڑھے گا۔

مزید : میٹروپولیٹن 1


loading...