بھارت ، تیز آواز میں موسیقی سے روکنے پر ہندو جنونیوں نے مسلمان نوجوان کو قتل کر دیا

بھارت ، تیز آواز میں موسیقی سے روکنے پر ہندو جنونیوں نے مسلمان نوجوان کو قتل ...

نئی دہلی (آئی این پی)بھارت میں سالِ نو پر تیز آواز میں موسیقی سے روکنے پر ہندو جنونیوں نے ایک مسلمان نوجوان کو تشدد کرکے قتل کردیا گیا۔ یہ واقعہ شمالی بھارتی ریاست جھاڑکھنڈ میں رانچھی کے قریب ماندر میں پیش آیا، جہاں سالِ نو پر جشن منانے والے ایک گروپ کو تیز آواز میں موسیقی سے روکنے پر ایک مسلمان نوجوان کی جان لے لی گئی۔ 19 سالہ نوجوان وسیم انصاری پونے میں یومیہ اجرت پر کام کرتا تھا اور کچھ روز پہلے ہی گاؤں واپس آیا تھا۔ ایک سینئر پولیس افسر نے بی بی سی کو بتایا کہ ابتدائی تحقیقات سے پتہ چلتا ہے کہ ایک گروپ سالِ نو پر تیز آواز میں موسیقی سن رہا تھا، جب وسیم انصاری اور اس کے 2 دوستوں نے اس گروپ کے پاس جا کر موسیقی بند کرنے کا کہا تو وسیم انصاری کے روکنے کے بعد بحث شروع ہوگئی اور گروپ کی جانب سے ان پر حملہ کیا گیا ، لگتا یہ ہے کہ انہیں کسی تیز دھار آلے سے مارا گیا۔انہوں نے بتایا کہ پولیس حکام نے دونوں برادریوں سے امن برقرار کھنے کی درخواست کی ہے جبکہ اس عزم کا بھی اظہار کیا کہ ملز موں کو جلد گرفتار کرلیا جائے گا۔متاثرہ نوجوان کے گاؤں میں رہنے والے حسیب الانصاری نے بتایا کہ گروپ والے مسلمانوں کے قبرستان کے قریب پارٹی کرر ہے تھے وسیم نے انہیں یہ کرنے سے منع کیا ۔انہوں نے بتایا کہ ان کے دوست خوش قسمت تھے کہ وہ وہاں سے بھاگنے میں کامیاب ہوئے، مجھے یقین ہے کہ اگر وہ نہیں بھاگتے تو گروپ والے انہیں بھی قتل کردیتے۔اس واقعہ کے بعد شہریوں نے نیشنل موٹروے کو بلاک کرکے ملزموں کی گرفتاری کا مطالبہ کیا، پولیس نے مظاہرین کو منتشر کردیا۔ مسلم اور ہندو برادری کے درمیان امن و امان برقرار رکھنے کے لیے سکیورٹی اہلکاروں کی اضافی نفری تعینات رہی۔

مسلمان قتل

مزید : علاقائی